کمزور نہیں۔۔آہن ہیں یہ ہاتھ: محنت کش خواتین کے عالمی دن (8مارچ)کے سلسلے میں پی ٹی یو ڈی سی کے زیر اہتمام ملک گیر تقریبات

کوئٹہ: محنت کش خواتین کے عالمی دن کے موقع پر تقریب
رپورٹ: شکیلہ بلوچ

پاکستان ورکرز فیڈریشن اور پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپیئن PTUDC کے زیر اہتمام’محنت کش خواتین کے عالمی دن‘ کی مناسبت سے کوئٹہ کے ایگریکلچر آفس میں ایک تقریب کا انعقاد کیا گیا، جس میں مختلف اداروں سے مرد و خواتین محنت کشوں نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔ تقریب سے پاکستان ورکرز فیڈریشن کے صدر ماما سلام بلوچ، پیر محمد کاکڑ، کمیونسٹ پارٹی کے سلطان یحییٰ، PTUDC مرکزی چیئرمین نذرمینگل، بلوچ سٹوڈنٹس ایکشن کمیٹی کے جمیل بزدار، شکیلہ بلوچ، عابدہ پروین، حانیہ بلوچ اور دیگر مقررین نے خطاب کیا۔

مقررین نے اپنے خطاب میں کہا کہ سرمایہ دارانہ نظام نے جہاں ہر چیز کو جنس میں تبدیل کرکے اسے منافع کمانے کا ذریعہ بنایا ہے، وہیں اس نظام نے عورت کو بھی ایک جنس میں تبدیل کردیا ہے۔ یہ اس نظام کی درندگی ہے۔ سرمایہ داری میں جہاں محنت کش طبقات سرمایہ دار طبقات کے استحصال اور جبر کا شکار ہیں وہیں محنت کش خواتین دوہرے استحصال کا شکار ہیں۔ اس لیے محنت کش خواتین کی اصل لڑائی اس نظام کے خلاف بنتی ہے۔ محنت کش مرد و خواتین طبقاتی بنیادوں پر اکٹھے ہو کر ہی اس استحصالی نظام کا خاتمہ کرسکتے ہیں۔

میرپورخاص: ’عورت اور انقلاب‘کے موضوع پر سیمینار
رپورٹ: کامریڈ شازیہ آریسر

محنت کش خواتین کے عالمی دن کی مناسبت سے طبقاتی جدوجہد، پی ٹی یو ڈی سی اور انقلابی طلبہ محاذ کی جانب سے 7مارچ بروز اتوار کو میر پورخاص میں ’عورت اور انقلاب‘کے موضوع پر ایک سیمینار منعقد کیا گیا۔

جس میں کامریڈ لتا، کامریڈ لاجونتی، کامریڈ شازیہ، کامریڈ نصرت میانو، کامریڈ رادھا بھیل، کامریڈ ونود کمار، کامریڈ کریم لغاری، کامریڈ محمد حسین، کامریڈ پرشوتم اور دیگر نے اپنے خیالات کا اظہار کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ انقلابات میں خواتین کا بڑا کردار ہوتا ہے، اس سرمایہ دارانہ دارانہ نظام میں عورت سب سے زیادہ مظلوم ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ دنیا میں عورتوں کے مسائل کاحل سوشلسٹ انقلاب میں ہے۔  پروگرام کو کامریڈ زارا اور کامریڈ روینا نے چیئر کیا۔ کامریڈ عباس جسکانی،کامریڈ عرس میانو، بینظیر میانو،ر وشن آریسر نے انقلابی گیت سنائے۔ آخر میں انٹرنیشنل گا کر پروگرام کا اختتام کیا گیا۔

راولپنڈی: ریلوے محنت کش خواتین کے ساتھ نشست کا اہتمام

پی ٹی یو ڈی سی کے زہر اہتمام آج ڈی ایس آفس، پاکستان ریلوے راولپنڈی میں ریلوے کی محنت کش خواتین کے ساتھ عالمی محنت کش عورت کے دن کے موقع پر نشت کا اہتمام کیا گیا، جس میں کامریڈ فوزیہ ویمن آرگنائزر نارتھ پنجاب نے خواتین کے مسائل اور اس کے حل سوشلسٹ انقلاب پر مفصل بات رکھی۔

خیرپور میرس: مٹھڑی، خیرپور میرس میں سیمینار
رپورٹ: فراز رڈ

پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین PTUDC کی جانب سے محنت کش خواتین کے عالمی دن پر مٹھڑی، خیرپور میرس میں سیمینار منعقد کیا گیا۔ سیمینار میں چیئر کے فرائض خوشبو رڈ نے ادا کیے۔ پروگرام کا آ غا ز روزا رڈ نے انقلابی گیت گا کے کیا۔
آپا غلام فاطمہ نے پروگرام میں شرکت کرنے والے خواتین و مرد حضرات کو خوش آمدید کہا اور عورتوں کو سیاست میں بڑھ چڑھ کر حصہ لینے کی بات کی۔ ارشاد رڈ اور انجینئر شیراز رڈ نے عورتوں کے عالمی دن کی تاریخ کے اوپر بات رکھی۔ نذیر رڈ نے روز مرہ زندگی میں خواتین کو درپیش مسائل پہ بات رکھی اور ان مسائل کا حل سوشلزم میں بتایا۔
دیگر مقررین میں پروفیسر بشیر احمد رڈ، انجینئر نگار شیراز احمد، رکیہ، رابعہ شمس الدین، منان رڈ اور فراز رڈ شامل تھے۔ تسلیم فاطمہ اور زید احمد نے انقلابی گیت پیش کیئے۔ آخر میں سعید خاصخیلی نے بحث کو سمیٹا۔ سیمینار میں دستک گروپ آف سول سوسائٹی مٹھڑی کا بھرپور تعاون رہا۔

راولا کوٹ محنت کش خواتین کے عالمی دن کے موقع

رپورٹ: حارث قدیر

جموں کشمیر نیشنل سٹوڈنٹس فیڈریشنJKNSF اورپاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین PTUDC کے زیر اہتمام محنت کش خواتین کے عالمی دن کے موقع پر JKNSFکے مرکزی سیکرٹریٹ راولاکوٹ میں منعقد کی گئی، اس تقریب سے JKNSF کی ممبر سنٹرل کمیٹی انعم اختر، رہنما علیزہ خان، رہنما بینش کاظم، ماہ نور، مریم حارث کے علاوہ جے کے این ایس ایف جامعہ پونچھ کے چیئرمین مجیب خان اور حارث قدیر نے بھی خطاب کیا۔

مقررین نے خطاب کرتے ہوئے محنت کش خواتین کو عالمی اور ملکی سطح پر درپیش مسائل کو زیر بحث لاتے ہوئے کہا کہ آج سرمایہ دارانہ نظام نے عورت کو بازار کی ایک جنس بنا کر رکھ دیا ہے، جہاں عالمی سطح پر صنفی امتیاز برتا جا رہا ہے وہاں پسماندہ خطوں میں محنت کش خواتین دوہرے جبر کا شکار ہیں۔ عورت کی آزادی اس نظام کے اندر رہتے ہوئے ممکن نہیں ہے، سوشلسٹ انقلاب کے ذریعے اس نظام کو ختم کر کے ہی نہ صرف خواتین کو بلکہ اس خطے کے تمام انسانوں کو حقیقی آزادی سے سرفراز کیا جا سکتا ہے۔اس لئے محنت کش خواتین و مردوں کو طبقاتی بنیادوں پر جڑت اختیار کرتے ہوئے اپنے آپ کو جدید سائنسی نظریات سے لیس کرنا ہو گاتاکہ اس ظالمانہ نظام کا خاتمہ کرتے ہوئے طبقات سے پاک معاشرے کا قیام ممکن بنایا جا سکے۔

راولا کوٹ: پیپلزپارٹی خواتین ونگ ضلع پونچھ کے زیر اہتمام سرکٹ ہاؤس میں تقریب
راولاکوٹ میں منعقد ہونے والی دوسری تقریب پیپلزپارٹی خواتین ونگ ضلع پونچھ کے زیر اہتمام سرکٹ ہاؤس راولاکوٹ میں منعقد کی گئی تھی۔ اس تقریب کی صدارت ضلعی صدر خواتین ونگ پیپلزپارٹی پونچھ کامریڈ نوشین کنول ایڈووکیٹ نے کی۔ تقریب سے نوشین کنول ایڈووکیٹ، ڈاکٹر خدیجہ نذر، سائرہ کوثر ایڈووکیٹ، صائمہ شفیع، صدف فیاض، سیماب ذوالفقار، لبابہ بابر ایڈووکیٹ اور دیگرنے خطاب کیا جبکہ سٹیج سیکرٹری کے فرائض سعدیہ انور نے سرانجام دیئے۔

باغ: خواتین کے عالمی دن کے موقع پر تقریب
ضلع باغ کے مقامی ہال میں جموں کشمیر نیشنل سٹوڈنٹس فیڈریشن اور پی ٹی یو ڈی سی کے زیر اہتمام خواتین کے عالمی دن کے موقع پر تقریب کا انعقاد کیا گیا۔ اس تقریب کی صدارت جموں کشمیر نیشنل سٹوڈنٹس فیڈریشن کی ممبر سنٹرل کمیٹی بشریٰ عزیز ایڈووکیٹ نے کی، جبکہ تقریب سے جموں کشمیر نیشنل سٹوڈنٹس فیڈریشن کے مرکزی سینئر نائب صدر راشد باغی، ڈپٹی سیکرٹری جنرل باسط ارشاد باغی، ماریہ موسیٰ، شاذیب خان، فاطمہ ارشاد، عائشہ اور دیگر نے خطاب کیا۔

مقررین نے کہا کہ تمام تر انسانی تاریخ عورت اور مرد کی مشترکہ جدوجہد شامل ہے۔ سرمایہ دارانہ نظام نے منافع کیلئے عورت کو منڈی کی جنس کے طور پر استعمال کرنا شروع کر رکھا ہے۔ ترقی یافتہ ممالک میں لمبی جدوجہد کے ذریعے عورت نے کچھ مراعات ضرور حاصل کی ہیں لیکن آج بھی واضح صنفی تفریق موجود ہے۔ پاکستان خواتین کے حوالے سے بدترین ممالک میں شمار ہوتا ہے۔ پسماندہ خطوں میں کئی علاقے ایسے ہیں جہاں عورت کے وجود کو ہی تسلیم نہیں کیا جاتا۔ خواتین آبادی کا نصف حصہ ہیں اور خواتین کی شرکت کے بغیر نہ تو انسانی تاریخ آگے بڑھ سکتی ہے اورنہ ہی انقلابی و سیاسی تحریک کو منظم اور کامیاب کیا جا سکتا ہے۔

حقیقی آزادی معاشی آزادی ہے، سوچنے، بولنے، اپنے بارے میں فیصلہ سازی کرنے کے اختیار کی آزادی ہے۔ سرمایہ داری کی موجودگی میں نہ تو معاشی آزادی میسر آسکتی ہے اور نہ ہی عورت کو معاشرے میں برابری کا مقام دلایا جا سکتا ہے۔ اس نظام کو اکھاڑے بغیر نجات کا کوئی راستہ ممکن نہیں ہے، اس نظام کو شکست دینے کیلئے مرد اور خواتین محنت کشوں کو طبقاتی بنیادوں پر جڑت بناتے ہوئے سوشلسٹ انقلاب کی حتمی فتح تک جدوجہد کرنا ہوگی۔ انسانیت کی بقا کی جدوجہد کو حتمی فتح تک جاری و ساری رکھا جائے گا۔