سٹیل ملز کے محنت کشوں کے لئے اپنی جان دینے سے بھی دریغ نہیں کریں گے، علی وزیر ممبر قومی اسمبلی

رپورٹ: PTUDC اسلام آباد

پاکستان میں محنت کشوں اور مظلوموں کی آواز، وزیرستان سے حلقہ این اے 50 سے منتخب ہونے والے رکن قومی اسمبلی علی وزیر نے کل قومی اسمبلی کے اجلاس کے لئے سٹیل ملز کے محنت کشوں کے لئے آواز بلند کی انہوں نے اپنے خطاب کے دوران حکومت پر تنقید کرتے ہوئے مطالبہ کیا سٹیل ملز سے محنت کشوں کو برطرف کرنے کی بجائے ایسی پالیسی مرتب کی جائے کہ ایک بار پھر سٹیل ملز منافع بخش ادارہ بن جائے۔

ان کا کہنا تھا کہ سٹیل ملز سے 9000 سے زائد محنت کشوں کو نکالا جا رہا ہے، یہ بہت بڑا ظلم ہے۔ ان محنت کشوں نے ادارے کے لئے اپنی جانیں قربان کی ہیں اور کئی مشکلات برداشت کرتے ہوئے بھی ادارہ کی ترقی کے لئے سرگرم عمل رہے ہیں۔  سٹیل ملز جو کہ ماضی میں انہی محنت کشوں کی وجہ سے ملک کو منافع دیتی تھی، افسوس کہ آج محنت کشوں کو بوجھ قرار دیا جا رہا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ، ’میں اس ایوان کے ذریعے اپیل کرتا ہوں کہ ان محنت کشوں نہ نکالا جائے اور مطالبہ کرتا ہوں کہ سٹیل ملز کے لئے ایسی پالیسی بنائی جائے جس سے یہ مل چند حضرات کے منافع کی بجائے اجتماعی منافع بخش ادارہ بن جائے۔ میں یہاں بھی واضح کر دوں کہ ہم سٹیل ملز کے محنت کشوں کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑے ہیں اور وہ اگر بھوک ہڑتال پر جائیں یا سڑکوں پر نکلیں تو ہم ان کے ساتھ کھڑے ہوں گے۔‘

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*