لاہور: ایپکا کی کال پر پورے ملک میں تمام سرکاری دفاتر میں آئی ایم پالیسیوں کے خلاف ہڑتال و احتجاج

رپورٹ: PTUDC لاہور

 آل پاکستان کلرکس ایسوسی ایشن (ایپکا) ماہ جون سے آئی ایم ایف کی تجویز کردہ ملازمین دشمن حکومتی پالیسیوں کے خلاف سراپا احتجاج ہیں، ہفتہ وار احتجاجات اور ہڑتال کا سلسلہ جاری ہے۔ کل مورخہ 15 جولائی کو ایپکا کی کال پر حکومت کی جانب سے بجٹ میں سرکاری ملازمین کو ریلیف نہ دینے اورملازمین دشمن پالیسوں کے خلاف آزاد کشمیر، گلگت اور اسلام آباد سمیت ملک کے تمام شہروں میں ملازمین نے  ہڑتال و احتجاج کیا۔ لاہور میں 45 سے زائد محکمہ جات میں ملازمین سے سخت احتجاج کرتے ہوئے قلم چھوڑ ہڑتال کی۔

اس دوران مرکزی صدر ایپکا حاجی محمد ارشاد چوہدری نے مظاہروں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ صدر پاکستان، وزیر اعظم پاکستان اور ارکان اسمبلی کی تنخواہوں میں 300 فیصد اضافہ اور بیورکریسی کو 150فیصد دیا گیا جبکہ سرکاری ملازمین کو دینے کے لیے خزانہ خالی ہے۔ انہوں نے حکومت سے اپیل کی کہ ملک بھر کے تمام ملازمین کی تنخواہوں میں 150 فیصد اضافہ کیا جائے اور ایپکا کے چارٹر آ ف ڈیمانڈ سرکاری ملازمین کی تنخواہوں اور الائونسز میں پائے جانے والی تفریق کا خاتمہ، ہاؤس رینٹ موجودہ سکیلوں پر دیا جائے۔ گروپ انشورنس کا نوٹیفکیشن و دیگرکی منظوری کا فی الفور اعلان کیا جائے۔

انہوں نے حکومت کو مطالبات کی منظوری کے لئے 22 جولائی تک کی ڈیڈ لائن دیتے ہوئے کہا کہ اس کے بعد ملک گیر ہڑتال، تالہ بندی و احتجاج ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ مطالبات کی منظوری تک چین سے نہیں بیٹھیں گے۔ ملازمین سے اظہار یکجہتی کے لئے پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین PTUDC سے مرکزی رہنما عمر شاہد اور دیگر نے ایپکا کے احتجاج میں شرکت کی۔ احتجاج کے بعد ایپکا کی مرکزی قیادت کے ساتھ  آئی ایم ایف کی پالیسیوں کے خلاف ملک گیرمحنت کشوں کا  الائنس بنانے پر سیر حاصل گفتگو کی گئی اور آخر میں طے پایا کہ 21 جولائی کو لاہور میں تمام یونینز کا اجلاس طلب کیا جائے گا۔

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*