کوئٹہ: بی ڈی اے جوائنٹ ایکشن کمیٹی کی تادم مرگ بھوک ہڑتال

رپورٹ: PTUDC کوئٹہ

بی ڈی اے جوائنٹ ایکشن کمیٹی نے ملازمین کی مستقلی اور دیگر مطالبات کے لیے 21 مئی سے کوئٹہ پریس کلب کے سامنے تادم مرگ بھوک ہڑتال کا آغاز کیا ہے۔ غریب ملازمین پچھلے آٹھ سال سے کنٹریکٹ پر کام کر رہے ہیں لیکن ابھی تک انہیں مستقل نہیں کیا گیا۔ پچھلے تین ماہ سے ملازمین کو تنخواہوں کی ادائیگی بھی نہیں کی گئی۔ ملازمین کا مطالبہ ہے کہ انہیں مستقل کیا جائے۔ پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئینPTUDC، مارٹن ڈاؤ مرک فیکٹری ایمپلائز یونین، پاکستان ورکر کنفیڈریشن بلوچستان ریجن اور بلوچستان لیبر فیڈریشن کے وفد نے بی ڈی اے (بلوچستان ڈیویلپمنٹ اتھارٹی) جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے کوئٹہ پریس کلب کے سامنے تادم مرگ بھوک ہڑتالی کیمپ کا دورہ کیا اور ہڑتالی ملازمین کو ہر طرح کی حمایت کا یقین دلایا۔

اس دوران ہڑتالی کیمپ سےPTUDC کے نذرمینگل، مرک ایمپلائز یونین کے منظور بلوچ، پاکستان ورکر کنفیڈریشن کے ماما سلام اور بلوچستان لیبر فیڈریشن کے حسن بلوچ نے خطاب کیا۔ انہوں نے اپنے خطاب میں صوبائی حکومت کی مزدور دشمن پالیسیوں کی شدید مذمت کی اور کہا کہ موجودہ حکومت نے ملک کو عالمی مالیاتی اداروں کو گروی رکھ لیا اور مزدور کُش پالیسیوں پر عمل پیرا ہے۔ موجودہ حکومت نے مہنگائی کے تمام سابقہ ریکارڈ توڑ دیئے۔ رہنماؤں نے مطالبہ کیا کہ صوبائی حکومت فوری طور پر بی ڈی اے کے کنٹریکٹ ملازمین کو مستقل کیا جائے بصورت دیگر تحریک کو مزید تیز کیا جائے گا اور کسی بھی ناخوشگواری کی ذمہ دار صوبائی حکومت ہوگی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*