دادو: امتیاز ملکانی کے گھر پر پولیس گردی کے خلاف زبردست احتجاجی دھرنا

رپورٹ: PTUDC دادو

مورخہ 2 اکتوبر کو آل سندھ ایری گیشن ٹریڈ یونین فیڈریشن کی جانب سے امتیاز ملکانی کے گھر کو پولیس کی مدد سے زبردستی خالی کروانے کے خلاف زبردست  احتجاج کیا گیا، جس میں سندھ کے متعدد شہروں سے آئے ہوئے ایری گیشن کے ملازمین نے شرکت کی۔ دھرنے اور مظاہرے میں پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین PTUDC کے رہنماؤں نے بھی شرکت کی۔ محکمہ ایری گیشن کے ڈرائیور امتیاز ملکانی پہلے سے الاٹ شدہ گھر جس میں وہ اپنے اہل و عیال کے ساتھ رہتے ہیں، کی الاٹمنٹ انجینئر خوشی محمد کے حکم پر منسوخ کرکے انہیں بے دخل کرنے کے لیے ان کے گھر پر رات کے وقت پولیس بھیجی گئی اور اس پر تشدد کیا گیا۔ ایسے بے رحمانہ عمل کے خلاف پورے سندھ کے ایری گیشن ملازمین سراپا احتجاج ہیں۔

اس سلسلے میں ایری گیشن آفیس دادو کے سامنے ایک زبردست دھرنا دیا گیا، اس موقع پر  ایری گیشن ٹریڈ یونین کے رہنماؤں مرکزی صدرعبدالرحیم بھارو، جنرل سیکریٹری اقبال احمد لاڑک، سرپرست اعلیٰ حاجی شعیب بلر، علی بخش وگھیو، فقیر گدا حسین میراثی، علی بخش زرداری، وائس چیئرمین سندھ شہباز پھلپوٹو، میرعرفان رند، لیاقت باجکانی، یار محمد چاچڑ، محمد عثمان ڈاھری، PTUDC کے رہنما سعید خاصخیلی اور صدام خاصخیلی نے مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایک طرف محنت کشوں پر مہنگائی، نجکاری اور بیروزگاری کے شدید حملے ہو رہے ہیں اور دوسری جانب انتقامی کارروائیاں الگ سے جاری ہیں۔ امتیاز ملکانی کے گھر کی الاٹمنٹ منسوخ کرکے اپنے من پسند مزدور دشمن عناصر کو الاٹمنٹ جاری کرنا ایک غیرانسانی سلوک ہے جس کی ہم شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں اور ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ انجینئر خوشی محمد کو فوری طور پر ہٹا کر امتیاز ملکانی کی الاٹمنٹ بحال کی جائے اور ایری گیشن ملازمین کو تحفظ فراہم کیا جائے۔

دھرنے کے بعد شرکا ریلی کی شکل میں پریس کلب پہنچے جہاں پر رہنماؤں نے اپنا احتجاج ریکارڈ کروایا اور کہا کہ اگر مطالبات نہ مانے گئے تو احتجاج کے دائرہ کار کو وسیع کر دیا جائے گا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*