فرانس: فیکٹری کی ممکنہ بندش کے خلاف محنت کشوں کی ہڑتال اور فیکٹری پر قبضہ

رپورٹ: PTUDC یورپ

مرکزی فرانس کے  کریئوس ریجن میں واقع گاڑیوں کے پرزے بنانے والی کمپنی GM & S کے پلانٹ کی ممکنہ بندش کے خلاف مزدوروں  نے ایک انقلابی قدم اٹھاتے ہوئے پلانٹ پر قبضہ کر لیا ہے۔   یہ کمپنی گاڑیوں کے مشہورعالمی برانڈز رونالٹ اور پیوگیوٹ کو گاڑیوں کے پرزے فراہم کرتی ہے۔    مزدوروں  نے تمام فیکٹری انتظامیہ کو بے دخل کر تے ہوئے فیکٹری کے پورے نظام پر کنٹرول حاصل کر لیا ہے۔  محنت کش اپنے مطالبات پورے نہ ہونے کی صورت میں مالکان کو پلانٹ اڑانے کی دھمکی دے رہے ہیں۔

پلانٹ کو ملنے والے آڈرز میں کمی واقع ہوئی ہے جس کی وجہ سے دسمبر 2016ء سے مالکان کو مالیاتی خسار ے کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔   اپنے شرح منافعوں میں کمی کے باعث رواں ماہ مالکان کی طرف سے پلانٹ کو بند کرنے پر سوچ بچار شروع کی گئی جس کی وجہ سے مزدوروں میں تشویش کی لہر دوڑ گئ۔  اس فیصلے کے باعث 280  مزدوروں  کی ملازمتوں کو شدید خطرہ لاحق ہے۔  یونین نمائندگان نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ، ہمیں افسوس ہے کہ ہمیں اس حد تک جانا پڑا،  ہم پچھلے چھ ماہ سے اپنے حقوق کے لئے لڑ رہے ہیں۔ اس وقت پلانٹ کے بند ہونے کا خطرہ منڈلارہا ہے ،  لیکن اگر ایسا ہوا توپلانٹ ایک ہی ٹکڑے میں واپس نہیں کیا جائے گا۔ اسی طرح ایک محنت کش نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ،  ہم اپنے حقوق اسی طرح  حاصل نہیں کرنا  چاہتے  تھے، لیکن ہمارے پاس کوئی دوسرا راستہ باقی نہیں بچا۔  ہماری اوسط عمریں 49 ہیں، اگر انہوں نے ہمیں ملازمتوں سے برطرف کر دیا تو ہم اور کیا کریں گے؟

مظاہرین نے پہلے ہی سائٹ پر مشینری تباہ کرنی شروع کر دی ہے۔  سوشل میڈیا پر جاری کی گئی تصاویرمیں ایک مزدورکو آرے کے ساتھ نصف سے ایک مشین کاٹنے دکھایا گیا ہے۔ ٹریڈ یونین کے نمائندوں کا کہنا ہے کہ جب تک ان کے مطالبات پورےنہیں ہوتے کارکنان ہر روز ایک مشین کو تباہ کریں گے۔  

یہ پہلا موقع نہیں جب فرانسیسی مزدوروں نے فیکٹری کو تباہ کرنے کی دھمکی دی ہے۔ 2000ء میں اردین شہر میں Cellatex کے محنت کش بھی تنخواہوں کی عدم ادائیگی کے مسئلہ پر اس طرح کا جارحانہ قدم اٹھانے پر مجبور ہوئے تھے۔ اسی طرح 2001ء  میں Moulinex کے مزدوروں نے بونس کی عدم ادائیگی کے مسئلہ پر پلانٹ کو آگ لگانے کی دھمکی دی تھی۔

مزید تصاویر کے لئے یہاں کلک کریں۔