جامشورو: ’’پاکستان کی موجودہ سیاسی اور معاشی صورتحال‘‘ کے موضوع پر لیکچر پروگرام

رپورٹ : کپل دیو

پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین PTUDC اور سندھی ادبی سنگت جامشورو کے زیرِاہتمام 19 مئی بروز اتوار کو شام 7 بجے پاکستان میں موجودہ سیاسی اور معاشی صورتحال کے عنوان پر ایک لیکچر پروگرام کا انعقاد کیا گیا۔ جس میں سندھڑی ٹاؤن، پھاٹک، سوسائٹی، کوٹری، سعیدآباد، حیدرآباد اور گرد و نواح سے ترقی پسند نوجوانوں اورسندھ اور مہران یونیورسٹی کے طلبہ نے بھرپور شرکت کی۔  ایوب جونیجو نے مقرر کا مختصراً تعارف کروایا اور موضوح کی اس عہد میں اہمیت پر بھی روشنی ڈالی۔ مختلف نوجوانوں نے شرکا کو اپنی انقلابی شاعری سنائی جس میں علی شیر چھچھر اور کامریڈ سہیل شامل تھے۔ جس کے بعد لیکچر کا باقاعدہ آغاز کیا گیا۔

کامریڈ انور پنہور نے سرمایہ داری کے عالمی بحران کو سمجھاتے ہوئے پاکستان کی موجودہ معاشی صورتحال کو تاریخی حوالوں سے واضح کیا اور کہا کہ انگریز سامراج نے انقلاب کو سبوتاژ کرنے کے لیے برِصغیر کا بٹوارا کیا اور اس نئی ریاست کا وجود دنیا کے نقشے پر تو آگیا لیکن معاشی طور پرہم نام نہاد آزادی کے بعد سے آج تک ان کے غلام ہی ہیں۔ پاکستان اپنے وجود سے سیاسی، معاشی اور تکنیکی حوالے سے کمزور ھونے کی وجہ سے جدید ممالک کا مقابلہ نہ کر سکا اور سامراجی اداروں اور سامراج کی دلالی کرتے ہوئے ایک مستحکم ملک بھی نہ بن سکا۔ انہوں نے مزید کہا کہ موجودہ نظام میں کوئی تبدیلی نہیں لا جاسکتی، آج تبدیلی کے نام پر نا صرف اداروں کو بیچا جا رہا ہے بلکہ ملک کو بھی براہ راست سامراجی اداروں کے حوالے کردیا گیا ہے۔ جو لوٹ کھسوٹ کے عمل کو تیز کریں گے اور عوام پر مزید ظلم ڈھائیں گے۔ اس انسان دشمن نظام سے نجات کا واحد راستہ سوشلسٹ انقلاب ہے، اس کے علاوہ بربریت ہے جس سے ہم آج گزر ہی رہے ہیں۔

آخر میں سوالات کا سیشن کیا گیا اور کامریڈ انور نے سوالوں کے جوابات دیتے ہوئے پروگرام کے اختتامی کلمات ادا کئے۔ 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*