مظفرآباد: مزدوروں کے عالمی دن کے موقع پراحتجاجی ریلی

رپورٹ :PTUDC مظفرآباد

 مظفرآباد میں پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین PTUDC اور JKNSF کے زیر اہتمام مزدوروں کے عالمی دن کے موقع پراپراڈہ سے احتجاجی ریلی کا انقعاد کیا گیا جس میں محنت کشوں اور نوجوانوں کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔ دوران ریلی محنت کشوں اور نوجوانوں نے سرمایہ داری، نجکاری، ٹھیکیداری، مہنگائی، غربت، بیروزگاری، مہنگی تعلیم، مہنگے علاج اور موجودہ پیش کئے جانے والے مزدور دشمن بجٹ کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔ ریلی اپر اڈہ، سی ایم ایچ چوک سے ہوتی ہوئی واپس اپراڈہ پہنچی جہاں پر احتجاجی جلسہ کیا گیا۔

احتجاجی جلسہ میں شریک محنت کشوں اور نوجوانوں سے مرکزی صدر پی ٹی یو ڈی سی کشمیر نوید اسحاق، ضلعی آرگنائزر پی ٹی یو ڈی سی مظفرآباد طارق چغتائی،سابق مرکزی صدر جے کے این ایس ایف راشد شیخ، راہنما پی ٹی یو ڈی سی امجد بٹ شعلہ، مرکزی ڈپٹی جنرل سیکرٹری این ایس ایف باسط ارشاد باغی، ضلعی صدر این ایس ایف فصیل راٹھور، اویس علی راہنما پی ٹی یو ڈی سی، جی بی ایس او جامعہ کشمیر کے صدر شجاعت بلتی اور دیگر نے خطاب کیا جبکہ اسٹیج سیکرٹری کے فرائض مروت راٹھور نے سر انجام دیے۔ دوران خطاب مقررین نے شکاگو کے محنت کشوں کی تاریخی جدوجہد پر بات رکھی اور کہا کہ شکاگو کے محنت کشوں نے آٹھ گھنٹے کام کرنے کے لئے جو جدوجہد کی تھی اور اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کیا تھا، ان کی اس جدوجہد کے ثمرات ایک وقت تک پوری دنیا کے محنت کش طبقے نے حاصل کر رکھے تھے۔ لیکن آج پھر سرمایہ داری کے زوال کے عہد میں سرمایہ دار محنت کش طبقہ سے زیادہ سے زیادہ وقت کام کروا کے زیادہ سے زیادہ دولت سمیٹ رہا ہے جس کے خلاف مختلف ممالک میں اوقات کار میں کمی کے خلاف تحریکیں نظر آتی ہیں۔ آج کے اس جدید ٹیکنالوجی کے عہد میں ہر انسان دو سے چار گھنٹے کام کر کے اپنی تمام ضرورتیں پوری کر سکتا ہے جس کے لئے محنت کش طبقے کو متحد ہو کر سرمایہ داری کو اکھاڑنا ہو گا اور سوشلسٹ معیشت کی طرف بڑھنا ہو گا۔

اس کے علاوہ مقرین نے کہا کہ 27اپریل کوپاکستان میں ن لیگ حکومت کی طرف سے پیش کیا جانے والا بجٹ مزدور دشمن بجٹ ہے جس کو محنت کش طبقہ نے مسترد کر دیا ہے اور اس کے خلاف تحریک چلانے کا فیصلہ کیا ہے اس تحریک کی پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین مکمل حمایت کرتی ہے۔ مقررین نے مزید کہا کہ آج مزدوروں کے عالمی دن کے موقع پر ہم مطالبہ کرتے ہیں

٭کنٹریکٹ، ٹھکیداری اور نجکاری سسٹم کا مکمل خاتمہ کرتے ہوئے تمام عارضی محنت کشوں کو مستقل بنیادوں پر تعینات کیا جائے۔

٭مزدور ٹریڈ یونین کی طرف سے پیش کئے جانے والے چارٹر آف ڈیمانڈ پر فی الفور عمل کیا جائے۔

٭کشمیر میں ٹریڈ یونین پرعائد پابندی کا خاتمہ کیا جائے۔

٭درجہ چہارم کے محنت کشوں کی تذلیل بند کی جائے۔

اس کے علاوہ انہوں نے پی ٹی ایم کی مکمل حمایت کا اعلان بھی کیا اور ہزارہ کمیونٹی کی نسل کشی کی شدید الفاظ میں مذمت کی اور کوئٹہ میں اس نسل کشی کے خلاف چلنے والی تحریک کی مکمل حمایت کا اعلان بھی کیا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*