رحیم یار خان: یوم مئی کی مناسبت سے علامتی احتجاجی مظاہرہ

رپورٹ: زیبی بھٹہ

پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین PTUDC اور ڈسٹرکٹ ورکرز ایکشن کمیٹی کے زیرِ اہتمام مہنگائی، بیروزگاری، نجکاری، دہشت گردی اور لیبر لاز کی خلاف ورزیوں کے خلاف ڈسٹرکٹ پریس کلب رحیم یار خان کے سامنے کورونا ایس او پیز کو مدِنظر رکھتے ہوئے علامتی احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ مظاہرہ سے بزرگ مزدوررہنما سید زمان خان، ضلعی سینئر نائب صدر پاکستان پیپلز پارٹی صفدر خان کانجو، چیئر ڈسٹرکٹ ورکرز ایکشن کمیٹی نعیم مہاندرہ ایڈووکیٹ، PTUDC کے آرگنائزر حیدر چغتائی، چیئرمین میڈیکل لیب ٹیکنالوجسٹ علی ملک، کنوینیئر مزدورریلی ربانی بلوچ، ایمپلائیز ویلفیئر ایسوسی ایشن شیخ زید ہسپتال عمران ارشد، سٹی جنرل سیکرٹری پیپلز پارٹی حسنین شاہ، بزمِ فرید کے جہانگیر انڈھڑ، خلیل بخاری، قاضی وحید، AWP کے اکبر ملک، سینئر نائب صدر پنجاب ٹیچرز یونین عبدالخالق گوپانگ، صوبائی جنرل سیکرٹری پیپلز لیبر بیورو ملک رحمان حبیب، پیپلز یوتھ آرگنائزیشن کے ضلعی صدر زین العابدین بھٹی، پی ایس ایف کے رہنما اظہار احمد، عمیر خان ڈاھر، آر ایس ایف کے آرگنائزر عمیر بھٹی، شاہد بنگش، عدنان سومرو، طارق قذافی، یعقوب چاچڑ، یونی لیور ورکر یونین کے صدر احمد کھوکھر، معروف قانون دان اسماعیل ڈاھر، پی پی پی کے ضلعی رہنما فیاض خان، سماجی کارکن فرحان عامر ایڈوکیٹ، سمیع بلوچ، کوکا کولا کے ساجد علی، PTUDC کے آرگنائزر رائس طارق، اشرف پیر جی، مسلم گوندل، اکرام بھٹی، MRDW کے ملک ندیم، سجاد شاہ، ینگ الائیڈ ہیلتھ پروفیشنلز ایسوسی ایشن (YAHPA) پاکستان کے زیبی بھٹہ اور طالب علموں، نوجوانوں اور مزدوروں کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔

اس موقع پر مطالبات پر مبنی مشترکہ چارٹر کا اعلان کیا گیا۔ چارٹر میں مطالبہ کیا گیا کہ تمام محنت کشوں بشمول فیلڈ ورکرز، ہیلتھ ورکرز، طلباء اور اساتذہ کو فوری کورونا ویکسین لگائی جائے۔ موجودہ کورونا کے بحران کی وجہ سے متاثرہ مزدوروں کو خصوصی پیکج دیا جائے۔

محنت کشوں پر جاری حملے بند کیے جائیں، لیبر لاز پر عمل درآمد کیا جائے۔ کم از کم تنخواہ ایک تولہ سونا کے برابر کی جائے۔ EOBI اور سوشل سیکیورٹی کارڈز کا اجراء کیا جائے۔ نئی مزدور دوست پالیسی متعارف کی جائے۔ رحیم یار خان میں نئی لیبر کالونی اور لیبر ہال تعمیر کیا جائے۔ یونی لیور اور کوکا کولا سمیت تمام برطرف مزدوروں کو بحال کیا جائے۔ شیخ زید ہسپتال کے نان ڈاکٹرز ملازمین کے حقیقی نمائندے خواجہ نعیم طارق پر بے بنیاد اور من گھڑت کیس ختم کرکے رہا کیا جائے۔  الائیڈ ہیلتھ پروفیشنلز AHP کونسل کی فوری تشکیل جائے اور الائیڈ ہیلتھ پروفیشنلز کے ڈگری ہولڈرز کو فوری طور پر 17 سکیل پر جاب دی جائے۔ تمام نوجوانوں کو روزگار دیا جائے یا کم از کم 15,000 روپے بےروزگاری الاؤنس دیا جائے۔ ہر سطح پر تعلیم مفت اور یکساں کی جائے اور تعلیم کا کاروبار بند کیا جائے۔ شعبہ صحت میں نجی کاروبار کو بند کیا جائے، قومی صحت پالیسی نافذ کی جائے اور تمام علاج معالجہ اور ادویات مفت فراہم کی جائے۔ بجلی، گیس اور پیٹرولیم کی ہوش ربا قیمتوں میں کمی کی جائے۔

مزدوروں، طالب علموں، نوجوانوں کی تنظیموں کے نمائندوں کی طرف سے جاری کیے گئے چارٹر کے ذریعے دنیا بھر میں جاری انقلابی اور محنت کشوں کی تحریکوں کے ساتھ اظہارِ یکجہتی کیا گیا اور سامراجی اور سرمایہ دارانہ نظام کی پالیسیوں کو مسترد کیا گیا اور سوشلسٹ انقلاب کے لئے جدوجہد جاری رکھنے کا عزم کیا گیا۔