کراچی: سول ایوی ایشن کی تقسیم اور مجوزہ نجکاری کے خلاف بھرپور مزاحمت کا اعلان

رپورٹ: PTUDC کراچی

پاکستان سول ایوی ایشن اتھارٹی کی سیگریگیشن اور مجوزہ نجکاری جیسے ظالمانہ حکومتی فیصلوں کی پر زورمذمت کرتے ہیں اور ان فیصلوں کو کالعدم قراردینے کا مطالبہ کرتے ہیں۔ ہم محنت کشوں نے ادارے کو دن رات محنت اور جانفشانی سے دن دگنی اور رات چوگنی ترقی کی منازل طے کروائیں اور اس وقت ادارہ 90 ارب سے زائد سالانہ آمدن دے رہا ہے۔ محنت کشوں نے اس ادارے کو ہوائی دنیا میں اپنی بہتر سروس کی بنیاد پر ایک بلند مقام دلوایا ہوا ہے۔ ہم ان کاوشوں سے اپنے ملک کا نام روشن کر رہے ہیں اور ریڑھ کی ہڈی کا کردارادا کر رہے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار سی اے اے جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے رہنماؤں کی جانب سے مورخہ 17 نومبر کو کراچی پریس کلب میں بھرپور پریس کانفرنس کے دوران کیا گیا۔

اس موقع پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے راؤ محمد اسلم، چیئرمین سی اے اے ایمپلائز یونٹی، زرین گل درانی جنرل سیکرٹری سول ایوی ایشن آفیسرز ایسوسی ایشن، اسد نیاز سیکرٹری جنرل الیکٹرانکس انجینئرز ایسوسی ایشن اور دیگر رہنماؤں کا کہنا تھا کہ سول ایوی ایشن کی تقسیم ہرگز برداشت نہیں کی جائے گی، سول ایوی ایشن کے محنت کش متحد ہیں اور وہ ادارے اور ملازمین کے حقوق کے تحفظ کے لئے ہر محاذ پر جدوجہد کریں گے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ موجودہ حکومت کے کچھ وزرا اور ناعاقبت اندیش مشیران جن کے نام سننا بھی ہمیں گوارا نہیں ہیں، آج وہ حکومت کی چاپلوسی کی وجہ سے وزیر اعظم کی آنکھ کا تارا بنے ہوئے ہیں۔ سی اے اے کو تباہی سے بچانے کے لئے ضروری ہے کہ ان عوام دشمن پالیسی سازوں کے نام یہاں بیان کئے جائیں۔ اس حوالے سے ڈاکٹر عشر ت حسین، سیٹھ عبدالرزاق داؤد، زلفی بخاری اور سیگریگیشن پالیسی کے فوکل پرسن محنت کشوں کے حقوق کے دشمن ناصر رضا حمدانی کا ذکر نہ کرنا انتہائی زیادتی ہو گی کیونکہ یہ افراد ملک کے منافع بخش اداروں کو برباد کرنے کی پالیسی پر عمل پیرا ہیں۔ یہاں ہم یہ بھی واضح کرنا چاہتے ہیں کہ عالمی شہری ہوا بازی کی تنظیم ICAO نے کبھی بھی سی اے اے کو تقسیم یا پرائیویٹ مافیا کے حوالے کرنے کا نہیں کہا اوریہ ادارہ سیکیورٹی حوالوں سے بھی نہایت اہمیت کا حامل ہے۔ سی اے اے جیسے حساس ادارے کو نجی شعبے کے حوالے کرنے کا مطلب ملکی سلامتی کو داؤ پر لگانا ہے۔ یہ منصوبہ نہ صرف مزدور دشمن بلکہ عوام سے غداری کرنے کے متراد ف ہے۔

ہم نے ادارے کے تحفظ کے لئے ہرراستہ اختیا ر کیا، اس میں عدالتوں کا رخ کیا گیا، ایئرپورٹس پر احتجاج بھی منظم کئے گئے مگر حکومتی بے حسی کی وجہ سے ہم سخت اقدامات کرنے پر مجبور ہیں۔ 24نومبر کو سول ایوی ایشن کے محنت کش دھرنا دیں گے اور ملک بھر کے میں تمام ایئرپورٹس پر بھرپور احتجاج کیا جائے گا۔ ہم حکومت کو مزید وقت دے رہے ہیں اور گزارش کررہے ہیں کہ ہمارے مطالبات کو فوراً تسلیم کیا جائے ورنہ پورے ملک کے ایئرپورٹس کو بھی مکمل جام کرنے سے دریغ نہیں کیا جائے گا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*