سٹیل ملزکی نجکاری اور محنت کشوں کی جبری برطرفیوں کے خلاف ملک کے طول و عرض میں مظاہرے جاری

رپورٹ: انفارمیشن بیورو

مورخہ 3 جون کواعلیٰ سطح کے وفاقی ادارے ’اکنامک کوآرڈینیشن کمیٹی‘میں سٹیل ملز کی نجکاری اور تمام محنت کشوں کی جبری برطرفیوں کے احکامات جاری کئے گئے، اس فیصلے کو ماننے سے انکار کرتے ہوئے سٹیل ملز کے محنت کشوں نے تحریک کا آغاز کیا۔ اس سلسلے میں پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپیئن PTUDC کی جانب سے فوری طور پر سٹیل ملز کے محنت کشوں کے لئے بھرپورمہم کا آغاز کیا گیا. مورخہ 4 جون سے سٹیل ملز کی نجکاری کے خلاف PTUDC کی جانب سے احتجاجات کا سلسلہ شروع ہے اس سلسلے میں مورخہ 8 تا10جون کو ہونے والے مظاہروں کی تفصیلات ذیل میں شائع کیں جا رہی ہیں۔

کوئٹہ
پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین PTUDC اور مارٹن ڈاؤ مارکر ورکرز یونین پاکستان کے زیراہتمام پاکستان سٹیل ملز سے تمام ملازمین کی جبری برطرفی اور پاکستان سٹیل ملز کی نجکاری کے خلاف مورخہ8جون کو کوئٹہ پریس کلب کے سامنے ایک احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ مظاہرے میں مارکر فیکٹری کے مزدوروں، PTUDC کے کارکنان، طلبا اور دیگر شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والوں نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔ مظاہرین سے پیرا میڈیکل سٹاف اایسو سی ایشن کے علی رضا منگول، مارٹن ڈاؤ مارکر ورکرز یونین کے منظور بلوچ، پاکستان ورکرز فیڈریشن کے صدر ماما سلام بلوچ اور پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپین کے مرکزی چیئرمین نذر مینگل نے خطاب کیا۔

انہوں نے اپنے خطاب میں کہا کہ تحریک انصاف نے اپنے انتخابی پروگرام میں ایک کروڑ نوکریاں دینے کا وعدہ کیا تھا لیکن اب اُن کی حکومت عالمی مالیاتی اداروں کی گماشتگی کرتے ہوئے مزدوروں سے نوکریاں چھین رہی ہے۔ پاکستان سٹیل مل سے ایک ہی دن میں نو ہزار ملازمین کو جبری طور پر برطرف کیا گیا اور اب پاکستان سٹیل مل کو اونے پونے دام بیچنے کی منصوبہ بندی کی جارہی ہے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ پاکستان سٹیل مل سے ملازمین کی برطرفی کے احکامات فی الفور منسوخ کیے جائیں اور پاکستان سٹیل مل کو مزدوروں کے جمہوری کنٹرول میں دیتے ہوئے اسے باقاعدگی سے چلایا جائے۔

دادو
مورخہ 9 جون کوPTUDC اوربیروزگارنوجوان تحریک دادو کی طرف سے اسٹیل مل پاکستان کی نجکاری اور ملازمین کی جبری برطرفیوں کے خلاف میونسپل پارک دادو سے پریس کلب دادو تک احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔مظاہرین نے ’پاکستان اسٹیل ملز کے ملازمین کی جبری برطرفی نامنظور‘، ’پاکستان اسٹیل مل کو بحال کرو‘، پاکستان اسٹیل ملز کی نجکاری نامنظور‘ کے نعرے لگائے۔ مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے PTUDC کے ضلع صدر محمد موریل پہنور BNT کے رہنما اعجاز بگھیو، حنیف مصرانی اور صدام خاصخیلی نے کہا کہ اسٹیل مل پاکستان کی معیشت میں ایک اہم ادارہ ہے جس کو حکمران اپنی ناقص پالیسیوں کی وجہ سے برباد کرکے اسے بیچنے کی کوشش میں لگے ہوئے ہیں اسی سلسلے کی یہ کڑی ہے جو 9350ملازموں کو جبری طور پر برطرف کیا گیا ہے۔ اس فیصلے کی ہم پرزور مذمت کرتے ہیں اور مطالبہ کرتے ہیں کہ سٹیل ملز کی نجکاری منسوخ کرکے جلد از جلد برطرف کیے گئے ملازمین کو بحال کیا جائے۔

سیہون
پاکستان اسٹیل ملز کراچی کے 9350 ملازمین کی جبری برطرفی کے خلاف سیہون میں پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین PTUDC اور بیروزگار نوجوان تحریک BNT کی جانب سےاحتجاجی مظاہرہ کیا گیا، جس سےPTUDC کے صوبائی صدرانور پنہور، BNT کے سکندر اوٹھو، کسان رہنما محرم اوٹھو اور کامریڈ عارب ملاح نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وفاقی حکومت کے طرف سے گولڈ ھینڈ شیک کے نام محنت کشوں کو جبری برطرف کیا جا رہا ہے جو کسی بھی طرح برداشت نہیں کیا جاسکتا، کیونکہ مل کو تباہ کرنے میں حکمران اور ان کی افسرشاہی ملوث ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ 7 سالوں سے محنت کشوں کو پنشن نہیں مل رہی۔

تھڑی میرواہ
اسٹیل مل کی نجکاری کے خلاف PTUDC اورBNT کی طرف سے پریس کلب ٹھری میرواہ میں احتجاج ریکارڈ کرایا گیا۔ جس میں PTUDC کے رہنما کامریڈ شرجیل، کامریڈ نسیم اعجاز اور کامریڈ ظفر بالشویک نے ان ریاستی اقدام کی مذمت کرتے ہوئے اسٹیل ملازمین کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کیا۔

رحیم یارخان
پاکستان اسٹیل ملز کے برطرف ملازمین کو بحال کیا جائے۔ اسٹیل ملز چلا کر 4ارب ڈالر زرمبادلہ بچایا جائے۔پاکستان اسٹیل کی بندش پاکستان کے خلاف سازش ہے۔عمران خان اپنے وعدوں کو پورا کرتے ہوئے اسٹیل ملز چلا کر مزدورں کو روزگار پر واپس لیں۔ان خیالات کا اظہار PTUDC کے مرکزی سیکریٹری جنرل قمر الزماں خان،رئیس طارق،ایم آر ڈبلیو کے رہنما ندیم ملک، خالد بھبھر،محسن سعید،پی پی کے سید حسنین شاہ، انقلابی سٹوڈنٹس فرنٹ کے رہنماعمر رشید، عمیر بھٹی، عمیر ڈاہر، ابوبکر، پنجاب پروفیسرز لیکچررز ایسوسی ایشن کے ڈویژنل سیکریٹری سید مبشرگیلانی، حضور بخش تابش، ثنااللہ، ڈسٹرکٹ ورکر کمیٹی کیربانی بلوچ، آصف بلو نے پاکستان اسٹیل ملز سے 9350 مزدوروں کی برطرفی کے خلافPTUDC کے زیر اہتمام ضلعی پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ سے کیا۔ مظاہرین نے مزدوروں کی برطرفی،اسٹیل ملز کی بندش اور نجکاری کے خلاف نعرہ بازی کی۔

جام پور

جام پور میں سٹیل ملز کے محنت کشوں سے یکجہتی کے لئے مظاہرے اور ریلی کا انعقاد کیا گیا۔ ریلی میں محنت کشوں، کسانوں اور طلبا کی بڑی تعداد میں شرکت کی۔ ریلی سے خطاب کرتے ہوئے PTUDC جنوبی پنجاب کے رہنما رؤف لنڈ نے کہا کہ سٹیل ملز کو بیچنا دراصل نجی سٹیل مل مالکان اور حکومت کا گٹھ جوڑ ہے، ہم اس فیصلے کی سخت مذمت کرتے ہیں اور سٹیل ملز کے محنت کشوں کے ساتھ کھڑے ہیں۔

ملتان
پاکستان اسٹیل ملز کی نجکاری اور  نو ہزار سے زائد محنت کشوں کے معاشی قتل عام کے خلاف اور سٹیل ملز کے محنت کشوں سے اظہار یکجہتی کے لئے پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین PTUDC کے زیر اہتمام مورخہ ۹ جون پریس کلب ملتان کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔
احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا کہ پی ٹی آئی ایم ایف کی حکومت اسٹیل ملز کی نجکاری نہ کرنے کے واعدے سے مکر گئی ہے اور اسٹیل ملز کے محنت کشوں کو بے روزگاری کی دلدل میں دھکیل دیا گیا ہے۔حکمران عوام کو روزگار دینے کی بجائے روزگار چھیننے پر آ گئے ہیں۔جو کہ سراسر ظلم ہے۔ہم حکمرانوں کی ان عوام دشمن پالیسیوں کو مسترد کرتے ہیں۔ فوری طور پراسٹیل ملز کو بحال کرو اور اسٹیل ملز سمیت تمام اداروں کی نجکاری کے عمل کو روکا جائے۔ سٹیل ملز کے محنت کشوں کی جبری برطرفیاں ختم کرو اور روزگار کا تحفظ دو، وزارت نجکاری کا خاتمہ کرو، نجکاری کی تمام شکلوں اور پالیسیوں کا خاتمہ کیا جائے اورسٹیل ملز سمیت تمام عوامی اور پیداواری اداروں کو مزدوروں کے جمہوری کنٹرول میں دیا جائے۔

احتجاجی مظاہرے سے پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین PTUDC ملتان کے ریجنل آرگنائیزر ندیم پاشا ایڈووکیٹ، ذیشان شہزاد، ملک بشیر احمد صدر پیپلز لیبر بیورو جنوبی پنجاب، مسعود گجر ضلعی صدر پنجاب ٹیچرز یونین، کامریڈ شکیل ملک، کامریڈ اسحاق، ملک عاشق بھٹہ جنرل سیکرٹری پیپلز لیبر بیورو جنوبی پنجاب، جنید، شاہزیب، احمد سلہری،عاصم خان نے خطاب کیا۔

فیصل آباد
لیبر قوومی موومنٹ، PTUDC، لیبر فیڈریشن اور عوامی ورکرز پارٹی نے لیبر ڈیپارٹمنٹ کے سامنے پاکستان سٹیل ملز کے برطرف 93 سو ملازمین کےساتھ اظہار یک جہتی کے لیئے مظاہرہ کیا۔ سٹیل مل کے ورکرز کی بحالی اور مل کو قومی تحویل میں چلانے کا مطالبہ کیا۔ورکرز اور میڈیا بات چیت کرتے ہوئے پرزور مطالبہ کیا کہ حکمران قومی اداروں کو ملکی مفاد کو پیش نظر رکھتے ہوئے منافع بخش بنائیں اورانتظامیہ تبدیل کریں۔ ٹریڈ یونین سے مشاور ت کرکے زیادہ سے زیادہ پروڈکشن اورکوالٹی بہتر بنا کر کے اسے نقصان سے نکال سکتے ہیں۔ PTUDC کےعلی تراب کا کہنا تھا کہ آئی ا یم ایف کے ایما پر حکومت پاکستان تمام عوامی اداروں کی نجکاری کرنا چاہتی ہے مگر عوامی اداروں کے تحفظ کے لئے ہر سطح پر جدوجہد کریں گے۔ حاجی اسلم وفا نے کہا کہ ہم ایسے تمام قومی اداروں کی نجکاری کی مخالفت کرتے ہیں ہم ہر طرح کی مزاحمت کریں گے۔ محنت کشوں کی بحالی کے لئے ہر ممکن کوشش کریں گے۔ مہنگائی میں اس قدر اضافہ ہوگیا ہے کہ آٹا، چینی،بجلی اور دیگر اشیاء زدور طبقے کی پہنچ سے بہت دور ہوچکی ہے۔ مزدور کا چولہابجتا نظر آرہا ہے، لہذا ہم حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ مہنگائی کے پیش نظر اجرتوں میں پچاس فیصد اضافہ کیا جائے کوڈ 19وائرس کے پیش نظر فیکٹریوں میں ایس او پیز پر مکمل عمل در آمد کرایا جائے۔

سیالکوٹ
سیالکوٹ پریس کلب کے سامنے سٹیل ملز کے محنت کشوں سے اظہار یکجہتی کے لئے PTUDC کی جانب سے احتجاجی مظاہرے کا انعقاد کیا گیا جس میں پی ٹی سی ایل پنشنرز ایسو سی ایشن، پنجاب پروفیسرز اور لیکچرز ایسو سی ایشن، انقلابی طلبہ محاذ RSF اورفیکٹریوں کے محنت کشوں نے شرکت کی۔ خطاب کرتے ہوئے محمد توقیر، پی ٹی سی ایل پنشنرز ایسوسی ایشن اور ناصر بٹ صدر PTUDC سیالکوٹ کا کہنا تھا کہ موجودہ تحریک انصاف کی حکومت مزدور دشمن پالیسیوں پر عمل پیرا ہے اور عوامی اداروں کی نجکاری کر کے سرمایہ داروں کو نوازنا چاہتی ہے۔ ہم اس عمل کی شدید مذمت کرتے ہیں اور جب تک نجکاری پالیسی منسوخ نہیں کی جا تی اور محنت کشوں کی بحالی کے احکامات جاری نہیں ہوتے تب تک ہمارا احتجاج جاری رہے گا۔

اٹک

PTUDC اور پیپلزلیبربیورو کے زیر اہتمام حسن ابدال سٹاپ اٹک پر سٹیل ملز کی نجکاری کے خلاف اور محنت کشوں کی بحالی کے حق میں احتجاجی مظاہرے کا انعقاد کیا گا۔ جس میں بڑی تعداد میں محنت کشوں نے شرکت کی۔ مظاہرے سے PTUDC کے مرکزی رہنما چنگیزملک اور پیپلز لیبر بیورواٹک کے ضلعی صدر سراج خٹک نے خطاب کیا۔ مقررین نے نجکاری کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ہم سٹیل ملز کے محنت کشوں کے ساتھ کھڑے ہیں اور ان کے مطالبات پورے ہونے تک جدوجہد جاری رکھیں گے۔

مظفرآباد، آزاد کشمیر
پاکستان سٹیل ملز کی نجکاری کے خلاف9 جون کو پی ٹی یو ڈی سی کی ملک گیر احتجاجی کال پر کشمیر کے مختلف شہروں میں بھی سٹیل مل ملازمین سے یکجہتی احتجاج کیے گئے۔ پاکستان زیر انتظام کشمیر کے دارلحکومت مظفرآباد میں لوئر پلیٹ میں PTUDC اورJKNSF کے کارکنان نے سٹیل ملز کی نجکاری مخالف اور جبری برطرف ملازمین کو فی الفور بحالی کے بینر اور پلے کارڈ کے ساتھ احتجاج کیا۔ احتجاج سے خطابر کرتے ہوئے PTUDC کشمیر کے صدر نوید اسحاق، طارق چغتائی،JKNSF کے نائب صدر مروت راٹھور اور دیگر نے اپنے خطاب میں کہا کے پی ٹی آئی حکومت شروع دن سے مزدور دشمن پالیسیاں لے کر آئی ہے اور اس وقت پورے ملک کو آئی ایم یف کے آگے گروی رکھ دیا ہے اس بات کا واضع اظہار سٹیل ملزکی نجکاری اور مزدوروں کی جبری برطرفیاں ہیں۔ ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ برطرف ملازمین کو بحال کرتے ہوے نجکاری کا فیصلہ واپس لیا جائے۔


راولا کوٹ
کھائیگلہ، راولا کوٹ میں بھیPTUDCاور JKNSF کے کارکنان نے سٹیل ملز کی نجکاری مخالف احتجاج کا انعقاد کیا۔ احتجاج سے مرکزی صدرNSFابرار لطیف،PTUDC کے مرکزی رہنما جنت حسین اور دیگر نے خطاب میں نجکاری اور برطرفیوں کی شدید الفاظ میں مذمت کی۔ مقررین نے مطالبہ کیا کہ فی الفور اسٹیل ملز کے محنت کشوں نوکریوں پر بحال کیا جائے نجکاری کمشن کا خاتمہ کیا جائے اور تمام تر مزدور دشمن آئی ایم ایف کی سامراجی پالیسیوں کو منسوخ کیا جائے۔

پلندری
پلندری میں PTUDC اورآزاد کشمیر ٹیچرز آرگنائزیشن کے زیر اہتمام احتجاج سے سعدناصر اور دیگر نے خطاب کیا، اسٹیل ملز کے مزدوروں سے اظہار یکجہتی کی اور حکومت کی نجکاری پالیسی کی شدید الفاظ میں مذمت کی۔ مقررین نے کشمیر بھر کے اساتذہ کے مسائل کو فی الفور حل کرنے کے مطالبات بھی کیے۔

PTUDC اس وقت سٹیل ملز کے محنت کشوں کے شانہ بشانہ جدوجہد کر رہی ہے، سٹیل ملز کے محنت کشوں کے اتحاد ٹریڈ یونین الائنس کے کنویئراکبر ناریجو نے PTUDC کی کاوشوں کا خصوصی شکریہ ادا کیا گیا۔

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*