بہاولپور: سانحہ احمد پور شرقیہ کا اصل ذمہ دار حکمران طبقہ ہے، پی ٹی یو ڈی سی

رپورٹ: انفارمیشن بیورو

احمد پور شرقیہ کے قریب ’آئل ٹینکرآتش زدگی‘ کے سبب 139 افراد کی ہلاکت اور100 سے زیادہ افراد کے جھلسنے کے دلخراش سانحہ پر پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین متاثرین سے گہرے افسوس کا اظہار کرتی ہے۔ حکومت سے مطالبہ کیا جاتا ہے کہ متاثرین کی امداد کے لئے کئے گئے اعلان پر عمل درآمد کو یقینی بنایا جائے۔ پی ٹی یو ڈی سی کے عہدیدران نذرمینگل، غفران احد، قمرالزماں خاں، چنگیزملک، ماجد میمن، عمرشاہد، ندیم پاشا نے اس افسوس ناک واقعہ کے بعد احمدپور شرقیہ کے قرب و جوار میں بڑے بڑے اسپتالوں کی موجودگی کے باوجود جھلسنے والے بچوں ،خواتین اور مردوں کے فوری علاج معالجے کیلئے درکار”برن سنٹر“ نہ ہونے پر حکومت کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ حکمرانوں کی ترجیحات میں انسانی زندگیوں کے تحفظ کی کوئی اہمیت نہیں ہے۔ صبح 6:15 پرحادثہ ہونے کے کئی گھنٹے بعد جھلس جانے والے مریضوں کو جائے حادثہ سے ایک کے بعد دوسرے اسپتالوں میں منتقل کیا جاتا رہا جبکہ ملتان میں قائم ’برن سنٹر‘میں منتقل کرنے کیلئے سول انتظامیہ کے پاس نہ تو’ ہیلی ایمبولنس ‘ تھے اور نہ ہی اس ہنگامی صورتحال پر کنٹرول کرنے کیلئے درکار انفراسٹرکچر موجود تھا۔ سالانہ ہزاروں ارب روپے کے صوبائی بجٹ کے باوجود جان بچانے والے، جلے ہوئے مریضوں کا علاج کرنے والے اسپتالوں، آتش زدگی سے نمٹنے کیلئے ’فائیر ٹینڈرز‘، ہنگامی حالات سے نبردآزما ہونے والی مشینری کا فقدان ثابت کرتاہے کہ سرمایہ دارانہ نظام میں حکمران طبقے کی ترجیح ایسے منصوبوں کا اجراءہوتی ہے جس میں ان کو بھاری کمیشن اور حصہ داری ملے اور ان منصوبوں سے وہ سستی شہرت حاصل کرسکیں۔ پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین کے عہدیداران نے کہا کہ لندن میں کئی منزلہ عمارت کی آتش زدگی نے بھی ثابت کیا ہے کہ سرمایہ داری میں منافع کمانے کیلئے سرمایہ کاری کی جاتی ہے جبکہ کسی حادثے کی شکل میں لوگوں کی جانیں بچانے کیلئے درکار نظام کی تنصیب سے گریز کرکے پیسے بچائے جاتے ہیں۔ پاکستان میں حکمران طبقے کے جاری تعمیراتی منصوبے ذاتی تشہیر اور لالچ کیلئے بنائے گئے ہیں جبکہ دورافتادہ علاقوں سمیت پورے پاکستان میں غریبوں کی زندگی بچانے اور ان کے علاج معالجے سمیت دیگر انفراسٹرکچر کے قیام کو یکسر نظر انداز کردیا گیا ہے۔ احمد پورشرقیہ میں موجودہ حادثہ بھاری ٹریفک سے عدم مطابقت رکھنے والی غیرمعیاری اور ادھڑی ہوئی سڑک پرہوا جہاں ایک ہفتہ پہلے بس گرنے کا حادثہ رونما ہوا تھا جس میں بھی قیمتی انسانی جانوں کا نقصان ہوا تھا.

پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین مطالبہ کرتی ہے کہ اورنج ٹرین، میٹروبس اوردیگر شوبازی کے منصوبوں کی بجائے بڑھتی ہوئی آبادی سے مطابقت رکھنے والی محفوظ سڑکوں ، پلوں اور راستوں کو تعمیر کیا جائے اور حکومت پہلی ترجیح اسپتالوں، علاج معالجے کے سنٹرز اور بنیادی انفراسٹرکچر کی تعمیر کو دے۔ دریں اثناء پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین کے راہنماﺅں نے متعدد حادثات کا شکار ہونے والے افراد کے متاثرین کیلئے اعلان کئے گئے معاوضہ پر شدید تنقید کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ سانحہ احمد پورشرقیہ کے متاثرین کیلئے اعلان کردہ رقم کی ادائیگی کو یقینی بنانے کیلئے لائحہ عمل بنایا جائے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*