ملتان: پنجاب سوشل سکیورٹی انسٹیٹیوشن کے محنت کشوں کا احتجاجی مظاہرہ

رپورٹ: کامریڈ ساجد

مورخہ 24 دسمبر2019ء کو پنجاب سوشل سکیورٹی انسٹیٹیوشن (PESSI)کے زیر اہتمام مطالبات کے حق میں ملتان پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے عاشق بھٹہ نے کہا کہ PESSI کی نجکاری کسی صورت بھی منظور نہیں کی جائے گی۔ اُنہوں نے کہا کہ یہ ادارہ 8لاکھ سے زائدرجسٹرڈ اسٹاف ممبران کو مفت طبی سہولیات فراہم کر رہا ہے اور یہ ادارہ اپنے اخراجات خود اُٹھاتا ہے جس کی وجہ پنجاب حکومت سے کوئی فنڈ نہیں لیا جاتا، یعنی حکومت پر یہ ادارہ کسی قسم کا مالی بوجھ نہیں ڈالتا۔ PESSIکی ورلڈ لیبرآرگنائزیشن کی رینکینگ میں یہ ادارہ 108ویں نمبر پر ہے جو اس ادارے کی بہتر کارگردگی کا ثبوت ہے۔ ہمیشہ نقصان پر چلنے والے اداروں کی نجکاری کی جاتی ہے جبکہ PESSI ایک منافع بخش ادارہ ہونے کے ساتھ ساتھ تیزی سے ترقی کی جانب گامزن بھی ہے۔ اس ادارے کے تحت مریضوں کو جدید ٹیکنالوجی کے ذریعے ہر سطح پر مفت طبی سہولیات فراہم کی جاتی ہیں۔
مقررین کا یہ بھی کہنا تھا کہ ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ ادارہ PESSI کو ہیلتھ مینجمنٹ کمپنی کے حوالے نہ کیا جائے اور نہ ہی اس کی کسی بھی صورت میں نجکاری نہ کی جائے۔

پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین PTUDC کے وفد نے اس مظاہرے میں بھرپور شرکت کی اور کامڑیڈ ندیم پاشا اور کامریڈ اسلم نے مظاہرین سے اظہارِ یکجہتی کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمئپین PESSI کے محنت کشوں کے ساتھ شانہ بہ شانہ کھڑی ہے اور ان کے مطالبات کے حق میں ہر قسم کی حمایت کرے گی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*