کوئٹہ: پاکستان ورکرز کنفیڈریشن کے زیر اہتمام بجٹ کے خلاف بلوچستان اسمبلی کے سامنے دھرنا

رپورٹ: PTUDC بلوچستان

پاکستان ورکرز کنفیڈریشن اور اتحادی تنظیموں کے زیر اہتمام 20جون کو بجٹ کے خلاف ایک احتجاجی ریلی کا اہتمام کیا گیا۔ تمام تنظیموں بشمول پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین PTUDC کے کارکنان میٹروپولیٹن کارپوریشن کے سبزہ زار میں جمع ہوئے جس کے بعد ریلی کی شکل میں صوبائی اسمبلی کی طرف روانہ ہوئے۔ ریلی مختلف شاہراؤں سے گزرتی ہوئی صوبائی اسمبلی کی عمارت کے سامنے اختتام پذیر ہوئی۔ اس دوران مظاہرین نے آئی ایم ایف کی جانب سے مسلط کردہ ظالمانہ بجٹ کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔ سر فہرست نعرے یہ تھے؛ ”آئی ایم ایف کا سامراجی بجٹ نامنظور، مزدوروں کی تنخواہوں میں اضافہ کرو، قومی اداروں کی نجکاری نامنظور، نجکاری پالیسی کو ختم کرو ختم کرو“۔ اسمبلی کے سامنے دیگر مزدور تنظیموں کے مظاہرے بھی جاری تھے۔ ریلی اسمبلی ہال کے سامنے دھرنے کی شکل اختیار کر گئی۔

دھرنے سے پاکستان ورکرز کنفیڈریشن کے جنرل سیکرٹری علی بخش جمالی، ماما سلام بلوچ، PTUDC کے علی رضا منگول اور دیگر نے خطاب کیا۔ انہوں نے اپنے خطاب میں کہا کہ موجودہ حکومت نے عوام اور مزدور دشمنی کی ساری حدیں پار کرلی ہے۔ ملک کو سامراجی اداروں کے پاس گروی رکھ لیا گیا ہے۔ تمام تر پالیسیاں سامراجی ادارے طے کر رہے ہیں۔ تاریخ میں پہلی دفعہ حکومت نے مزدوروں کی تنخواہوں میں کوئی اضافہ نہیں کیا۔ یہ محنت کشوں کے لیے ایک وارننگ ہے۔ اگر ہم نے مزاحمت نہیں کی تو یہ حکمران ایک ایک کرکے ہماری ساری مراعات چھین لیں گے۔ اس لیے ہمیں تمام گروہی مفادات سے بالاتر ہوکر اپنے طبقاتی مفادات کے لیے متحد ہو کر ان سامراجی پالیسیوں کے خلاف لڑنا ہوگا۔ اسی میں ہی محنت کشوں کی نجات ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*