اسلام آباد: پی ٹی ڈی سی ملازمین کا ملازمت بحالی کے لیے احتجاجی تحریک کا آغاز

رپورٹ: PTUDC اسلام آباد

پاکستان ٹورازم ڈیویلپمنٹ کارپوریشن  (پی ٹی ڈی سی) ملازمتوں سے غیر قانونی برطرفی پر پی ٹی ڈی سی کے ملازمین کا پریس کلب اسلام آباد کے سامنے بھر پوراحتجاج جاری

پاکستان ٹورازم ڈیویلپمنٹ کارپوریشن (پی ٹی ڈی سی) اور اس کے 4 ذیلی اداروں جس میں پی ٹی ڈی سی فلیشمینز ہوٹل، پی ٹی ڈی سی کے40 سے زائد موٹلز، پاکستان ٹورز لمیٹیڈ اور لاہور دہلی (دوستی) بس سروس کے ملک بھر میں کل 450 سے زائد مستقل ملازمین کو کورونا سے ہونے والے مالی خسارے کا بہانہ بنا کر یکم جولائی2020ء کو جبری طور پرملازمتوں سے فارغ کر دیا گیا تھا اس کے بعد پی ٹی ڈی سی ہیڈ آفس اور سیاحتی معلوماتی مراکز کے ملازمین کوتنظیم نو کے نام پر 7 جولائی 2020ء کو مستقل ملازمتوں سے جبری طور پر فارغ کر دیا گیا۔

<

پی ٹی ڈی سی ملازمین کو پہلے گولڈن ہینڈ شیک پیکج آفر کیا گیا تھا، اس سلسلہ میں مینجمنٹ اور ایمپلائز یونین کے مابین بہت سی میٹنگ بھی منعقد ہوئیں لیکن کسی حتمی نتیجہ پر نہ پہنچ سکے۔ بالاخر مینجمنٹ نے بورڈ آف ڈائریکٹرز کے 88 ویں اجلاس میں یکطرفہ پیکج منظور کروا لیا گیا، جو کہ ملازمین کے لیے ناقابل قبول تھا۔ لہذا پی ٹی ڈی سی ایمپلائز یونین نے اپنے ملازمین کے حقوق کے لیے قانونی جنگ لڑنے کا فیصلہ کیا اور منیجمنٹ کو برطرفیوں سے روکنے کے لیے متعلقہ عدالت سے رجوع کیا اور مختلف مقدمات دائر کیے۔ جس پر مینجمنٹ نے شدید غصے کا اظہار کرتے ہوئے بورڈ آف ڈائریکٹرز کے 89 ویں اجلاس میں اپنے ہی منظور شدہ یک طرفہ پیکج کو مسترد کر دیا اور فیصلہ کیا کہ کہ اب ہم ملازمین کو کو کسی قسم کا کوئی پیکیج نہیں دیں گے۔ بلکہ بغیر کسی پیکج کے ملازمین کو نوکریوں سے جبری طورپر برطرف کر دیا گیا اور ملازمین کی کوئی مالی معاونت بھی نہیں کی گئی۔ رات کے اندھیرے میں تمام ملازمین کے برطرفی کے خطوط و نوٹیفکیشن جاری کر دیئے گئے جس پر ملازمین میں شدید پریشانی کی لہر دوڑ گئی۔ مینجمنٹ کے ایک ہی جھٹکے سے پی ٹی ڈی سی کے سینکڑوں ملازمین کی 25 سے 35 سال کی سروس پر پانی پھر گیا۔

اب ملازمین نے اپنی سروس پر بحالی کے لیے احتجاجی تحریک کا آغازمورخہ 14 ستمبر2020 بروزسوموار سے پریس کلب اسلام آباد سے شروع کیا اور اپنے مطالبات اور حقوق کے لیے آواز بلند کی۔ احتجاجی تحریک کی سربراہی پی ٹی ڈی سی ایمپلائز یونین کے صدر ماجد یعقوب نے کی، ملازمین نے حکومت کو للکارہ کہ وہ ملازمین کی غیرقانونی برطرفیاں معطل کرے اور ملازمین کو ملازمت پر واپس بحال کریں۔ احتجاجی تحریک میں چیئرمین، پی ٹی ڈی سی، زلفی بخاری اور منیجنگ ڈائریکٹرپی ٹی ڈی سی، انتخاب عالم کے خلاف بھرپور نعرے بازی کی گئی اور ڈیپوٹیشن پر آئے گئے 6 افسران کو واپس بھیجنے کا کہا گیا۔ اس تحریک میں یہ فیصلہ کیا گیا کہ اب ملازمین اپنے حقوق کی جنگ کے لئے میدان میں اتر آئے ہیں اب وہ کسی صورت پیچھے نہیں ہٹیں گے اور آنے والے دنوں میں پارلیمنٹ کی طرف مارچ کریں گے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*