اسلام آباد: ملازمتوں سے جبری برطرفیوں کے خلاف پی ٹی ڈی سی ملازمین کا احتجاج

تحریر: PTUDC اسلام آباد

تحریک انصاف کی حکومت میں پاکستان ٹورازم ڈیویلپمنٹ کارپوریشن (PTDC) پر مسلط غیرمتعلقہ افسران نے انصاف کی دھجیاں بکھیرتے ہوئے ملازمین کو بیدردی سے ملازمتوں سے فارغ کردیا۔ PTDC کے چیئرمین زلفی بخاری میڈیا پر بیٹھ کرگولڈن ہینڈ شیک پیکج کے جھوٹ پر مبنی بیانات دے رہے ہیں جبکہ حقیقت میں ملازمین کو ان کے قانونی واجبات ادا کیے بغیر ہی فارغ کر دیا گیا ہے۔

PTDC کے برطرف شدہ ملازمین نے منیجنگ ڈائریکٹر کے دفتر کے سامنے احتجاج کیا لیکن مینجمنٹ کے کانوں پر جوں تک نہ رینگی۔ دوران احتجاج دو ملازمین زاہد حسین شاہ اور محمد جمیل کو ہارٹ اٹیک آگیا اور انہیں ریسکیو ایمبولینس میں ہسپتال منتقل کیا گیا۔ دونوں ملازمین کی حالت تشویش ناک ہے۔ ملازمین نے احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ اگر خدانخواستہ ان ملازمین کو کچھ ہوا تو ان کے قتل کی ذمہ داری مینجمنٹ پر ہو گی۔

PTDC ایمپلائز یونین کے صدرماجد یعقوب اورفلیش مین یونین کے جنرل سکریٹری انجم افضال نے میڈیا کو بتایا کہ ملازمین کے بنیادی حقوق میں گریجوایٹی کو سرے سے ختم کردیا گیا ہے۔ حکومت سیاحت کو فروغ دینے کے بلند و بانگ دعوے کر رہی ہے جبکہ واحد وفاقی سیاحتی ادارے PTDC کے ملازمین کا معاشی قتل عام جاری ہے۔ PTDC کے ملک بھرکے اہم سیاحتی مقامات پر بیش قیمت موٹلز اور اثاثہ جات ہیں۔ ان بیش قیمت اثاثہ جات کو اپنے منظورنظر فراد کو لیز پر دینے کیلئے یہ کھیل رچایا جارہا ہے۔ چونکہ ملازمین اس منصوبے کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ ہیں، لہذا ملازمین کو فارغ کردیا گیا ہے۔ ان ملازمین میں بیشتر افراد نے اپنی عمر کا بڑا حصہ اس ادارے کی ترقی و تعمیر میں گزار دیا ہے اوراتنے سال سروس کا ثمر یہ ہے کہ انہیں کسی اضافی پیکج تو دور کی بات بلکہ قانونی واجبات ادا کیے بغیر ہی فارغ کر دیا گیا۔ یکم جولائی کے نوٹیفیکیشن کے مطابق پاک بھارت بس سروس، پاک چین بس سروس، پی ٹی ایل، PTDC موٹلزاور فلیشمینز ہوٹل کے آپریشنز بند کر دئیے گئے ہیں اور ان کے ملازمین کو فارغ کر دیا گیا۔ جبکہ 7جولائی کے نوٹیفیکیشن کے تحت PTDC ہیڈ آفس کے 50 فیصد ملازمین کو بھی فارغ کر دیا گیا ہے۔

انہوں نے مزید بتایا کہ PTDC میں منظورنظرافراد کو ڈیپوٹیشن پر لایا گیا اور کلیدی پوسٹوں پر تعینات کر دیا گیا ہے۔ مستقبل میں نئے ملازمین کی بھرتی بھی بہت جلد ہونے والی ہے۔ موجودہ ایم ڈی انتخاب عالم جو انیسویں گریڈ کا افسر ہے بطور جنرل منیجر ڈیپوٹیشن پر PTDC میں تعینات کیا گیا اوراسے اکیسویں گریڈ میں منیجنگ ڈائریکٹر کا اضافی چارج دے دیا گیا۔ یہ شخص انتخاب عالم گزشتہ سال مئی سے اس ادارے پر مسلط ہے اور اکیسویں گریڈ کی تمام مراعات سے بھرپور استفادہ کر رہا ہے۔ اس شخص کی بطور ایم ڈی تعیناتی پر اسلام آباد ہائی کورٹ میں کیس بھی چل رہا ہے اور عدالت نے اسے معمول کے علاوہ دیگر اہم فیصلے کرنے سے بھی روکا ہوا ہے لیکن یہ شخص نہایت ڈھٹائی سے PTDC موٹل بورڈ، فلیش مین بورڈ اور پاکستان ٹورزلمیٹیڈ کے بورڈز کی بطور چیئرمین صدارت کر کے من چاہے فیصلے کر رہا ہے۔