کوئٹہ: پاکستان اسٹیل ملز سے محنت کشوں کی جبری برطرفیوں اور نجکاری پالیسی کے خلاف احتجاجی مظاہرہ

رپورٹ: زرمش خان

پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین PTUDC کے زیر اہتمام پاکستان اسٹیل ملز سے 4500 سے زائد مزدوروں کی جبری برطرفیوں اور نجکاری پالیسی کے خلاف مورخہ 17 دسمبربروز جمعرات کوئٹہ پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کا انعقاد کیا گیا۔ احتجاجی مظاہرے کے شرکا نے حکومت کی مزدور دشمن پالیسیوں، آئی ایم ایف کی ایما پر قومی اداروں کی نجکاری، ڈی ریگولیشن، ڈاؤن سائزنگ اوررائٹ سائزنگ کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔

احتجاجی مظاہرے سے PTUDC کے مرکزی چیئرمین نذرمینگل، ریلوے محنت کش یونین کے چیئرمین کامریڈ مجید، ریڈیو پاکستان یونین کے صدر اختر کرد، سٹیٹ بینک لیبر یونین کے صدر صالح زہری، پیرامیڈیکل ایسوسی ایشن کے رہنما علی رضا منگول، پی آئی اے پیپلز یونٹی کے ندیم کاسی اور مرک ایمپلائز یونین کے غلام رسول نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ حکومت عالمی مالیاتی اداروں کی ایما پر ملک کے تمام اداروں کو سرمایہ داروں کو اونے پونے بیچ رہی ہے اور لاکھوں محنت کشوں کو بے روزگار کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اسٹیل ملز سے ہزاروں مزدوروں کو برطرف کیا گیا، جس کے ذریعے سٹیل مل کو سرمایہ داروں کے حوالے کر کے اسے ہڑپ کرنے کا راستہ ہموار کیا جارہا ہے۔

مقررین نے کہا کہ ہم کسی صورت اس گھناؤنے عمل کو کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔ حکمران طبقہ سرمایہ داروں کے منافعوں میں اضافے کے لیے تمام قومی اداروں کو بیچ رہی ہے جبکہ انہیں مزدوروں کے روزگار کا کوئی خیال نہیں۔ یہ حکومت کروڑوں نوکریاں دینے کی بات کرتی تھی لیکن اب کروڑوں محنت کشوں کو بے روزگار کر رہی ہے۔ اسٹیل ملز کے برطرف مزدوروں کو فی الفور بحال کیا جائے اور سٹیل مل کو محنت کشوں کے کنٹرول میں دیا جائے کیونکہ صرف محنت کش ہی اسے چلا سکتے ہیں۔ بصورت دیگر  پورے ملک میں شدید احتجاج کیا جائے گا۔