صادق آباد: فلسطینیوں پر اسرائیلی مظالم کے خلاف احتجاجی مظاہرہ

رپورٹ: مزدورنامہ

شیخ الجراح میں فلسطینیوں کے گھر مسمار کرنے،غزہ میں اسرائیلی بمباری اور نہتے فلسطینیوں پر مظالم کے خلاف پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین اور پریس کلب صادق آباد کے زیر اہتمام مورخہ 20 مئی کو احتجاجی مظاہرہ منعقد کیا گیا۔ مظاہرے میں ایمپلائیز (یونین سی بی اے) فوجی فرٹیلائیزر کمپنی ماچھی گوٹھ سے مزدوروں کی کثیر تعداد مزدور راہنما نواب دین لاشاری کی قیادت میں پریس کلب پہنچی۔ پنجاب ہائی وے یونین سے مزدور چوہدری ارشد کی قیادت میں، پروفیسرز اینڈ لیکچرز ایسوسی ایشن کے اساتذہ پروفیسر افضل چھٹہ کی قیادت میں،انقلابی رکشہ یونین کے محنت کش محمد شوکت کی قیادت میں، محمد غفور کی قیادت میں ٹیکسی اسٹینڈ ڈرائیور یونین،عباس تاج کی قیادت میں پنٹرز یونین جبکہ رحیم یارخاں سے طلبا عمیر بھٹی اوراظہار کی قیادت میں، سول ڈیفنس سے جاوید احمد،انجمن تاجراں کے جنرل سیکریٹری احسان اسد، پاکستان پیپلز پارٹی سٹی صادق آباد کے جنرل سیکریٹری بشیر احمد سومرو، میاں انوار طارق، اسرار چوہان، ترنڈہ سوائے خاں سے مسعود افضل کاشی کی قیادت میں انقلابی طلبہ محاذ کے اراکین نے شرکت کی۔

فیصل آباد سے آئے ہوئے پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین کے مرکزی رہنما عمر رشید نے خصوصی طور پرمظاہرے میں شرکت کی۔ مظاہرین کے ہاتھوں میں فلسطینوں کے حق اور اسرائیل کی مذمت کے نعروں پر مبنی نعروں کے بینرزتھے۔ مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے عمر رشید، محمد افضل چھٹہ، اسرارچوہان، ربانی بلوچ،محمد اظہار، حبیب چانڈیہ، چوہدری محمد ارشد، احسان اسد، محمد جاوید، نواب دین لاشاری، عباس تاج، بشیر احمد سومرو، شہزادہ عباس، یونین آف جرنلسٹ کے قمراقبال، شہزادہ عباس، قمرالزماں خاں نے مسئلہ فلسطین پر روشنی ڈالتے ہوئے فلسطینیوں کے اسرائیل سے انخلاء اور غزہ میں تشدد کی شدید مذمت کی۔

مقررین نے نہتے فلسطینیوں پر ظلم وستم کا ذمہ دار سامراجی قوتوں کو ٹھہرایا، جو اسرائیلی صیہونی ریاست کی جنگی اعانت کررہے ہیں۔ مقررین نے کہا کہ اسرائیلی ریاست کا قیام عالمی قوتوں کی بدنیتی کا مظہر ہے جس کی وجہ مشرق وسطی میں وسائل کی لوٹ مار کے خلاف ہر مزاحمت کا گلا گھونٹنا ہے۔ تاریخی طور پر فلسطینی ہزاروں سال سے اس سرزمین پر بس رہے ہیں، ان کو جبراََ یہاں سے نکالنا قبضہ گیریت ہے جو کہ ناقابل قبول ہے۔ مقررین نے اسرائیل میں یہودی عربوں اور بطور خاص یہودی محنت کشوں اور صیہونی ریاست میں فرق کی وضاحت کرتے ہوئے مسئلہ فلسطین کے دوریاستی حل، مذہبی یا قومی بنیادوں پر تجزیے کو مسترد کیا۔ انہوں نے کہا کہ مسئلہ فلسطین پورے مشرق وسطی کے مسئلے کے ساتھ منسلک ہے۔ ایک سوشلسٹ مشرق وسطی ایسی جڑت اور اتحاد عمل میں لاسکتا ہے جس کی بنیاد پر اسرائیلی محنت کشوں اور خطے کے دوسرے محنت کشوں کے مابین تمام کدورتوں اور تعصبات کی جگہ یک جہتی عمل میں لائی جاسکتی ہے۔ مظاہرین نے اسرائیل، امریکہ، دیگر سامراجی ممالک، سرمایہ داری نظام اور خطے کے عرب حکمرانوں کے خلاف شدید نعرہ بازی کی۔ آخر میں اسرائیل صیہونیت کے خلاف اور اسرائیل سمیت خطے کے تمام محنت کشوں کی یک جہتی کے حق میں قرارد اد اتفاق رائے سے پاس کی گئی۔ مظاہرے کا اختتام اسرائیلی پرچم کو جلا کر کیا گیا۔