اسلام آباد: پاکستان ٹورزم ڈیلویلپمنٹ کارپوریشن کے محنت کشوں کے ساتھ اظہاریکجہتی

رپورٹ: PTUDC اسلام آباد

PTDC انتظامیہ نے رواں سال ستمبر میں فیصلہ کیا تھا کہ 450 ملازمین کو ملازمت سے فارغ کیا جائے اور 400 ارب روپے کی جائیدادیں صوبوں کے حوالے کردی جائیں گی۔ گزشتہ ہفتے حکومت نے اعلان کیا کہ 31 جنوری، 2020 ء تک پی ٹی ڈی سی کے قریب0 40مستقل ملازمین کو ملازمت سے فارغ کر دیا جائے گا اور جائیدادیں صوبوں کے حوالے کر دیں جائیں گی۔ حکومت نے ملازمین کو تین بنیادی تنخواہ جو کہ چھ ماہ کے کرایہ کے برابر بنتا ہے، گولڈن شیک ہینڈ کی آفر کی ہے۔ ساتھ ہی PTDC کے تمام موٹلز کو نجی پارٹیوں کو تجارتی بنیادوں پر لیز پر دیئے جائیں گے، جو ان کی بحالی کے لئے اپنے اپنے مارکیٹنگ کے منصوبے اور سرمایہ کاری لائیں گے۔

تاہم محنت کشوں نے اس مکروہ منصوبے کو مسترد کر دیا ہے اور اس فیصلے کے خلاف فیصلہ کن جدوجہد کا آغاز کر دیا ہے، حکومتی فیصلے کے خلاف محنت کشوں نے عدالت سے بھی رجوع کیا ہوا ہے تاہم اس لڑائی کو محنت کش اپنے بل بوتے پر جیتنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپیئن PTUDC محنت کشوں کے ساتھ مکمل اظہار یکجہتی کرتے ہوئے تمام یونینز اور ترقی پسند قوتوں کو اس لڑائی میں شامل ہونے کی پر زور اپیل کرتی ہے۔

ذیل میں ریلوے ورکرز یونین، انجن شیڈ کے صدر عنایت گجر کا انٹرویو شائع کر رہے ہیں جس میں وہ اپنی یونین کی حالیہ تحریک پر اظہار خیال کر رہے ہیں اور ساتھ ہی PTDC کے محنت کشوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کا اعلان کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ اگر محنت کشو ں کے منہ سے نوالہ چھیننے کی کوشش کی گئی تو ہم پورے پاکستان میں زبر دست احتجاج کریں گے۔

 

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*