لاہور: آل ایمپلائز ایکشن کمیٹی آف اسٹیل ملز کے زیر اہتمام جبری برطرفیوں کے خلاف احتجاجی مظاہرہ

رپورٹ: PTUDC لاہور

آل ایمپلائز ایکشن کمیٹی آف اسٹیل ملز کی جانب سے کل مورخہ 2 دسمبر کو اسٹیل ملز سے محنت کشوں کی جبری برطرفیوں اور نجکاری پالیسی کے خلاف پریس کلب لاہور کے سامنے بھرپوراحتجاجی مظاہرے کا انعقاد کیا گیا، جس میں اسٹیل ملز لاہور یونٹ سے بڑی تعداد میں محنت کشوں نے شرکت کی۔ مظاہرے کے دوران حکومت وقت کی ظالمانہ پالیسیوں کے خلاف سخت نعرے بازی کی گئی۔ اظہار یکجہتی کے لئے پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین PTUDC سے عمرشاہد، انقلابی طلبا محاذ RSF سے عمار یاسر، انقلابی ریلوے یونین و ریل مزدور اتحاد کے مرکزی رہنما علی مردان، ینگ ڈاکٹرز ایسو سی ایشن پنجاب سے صوبائی میڈیا سیکرٹری ڈاکٹر عمران، ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن سروسز ہسپتال کے صدر ڈاکٹر عبد الرحمن، واپڈا ہائیڈرو الیکٹرک یونین و پاکستان ورکرز کنفیڈریشن کے مرکزی سیکرٹری اسامہ طارق اور دیگر نے شرکت کی۔


اس موقع پر آل ایمپلائز ایکشن کمیٹی آف اسٹیل ملز کے رہنماؤں عرفان، شہزاد، غلام مصطفی، راؤ نعیم، نذیر گوندل اور دیگر نے اپنے خطاب میں کہا کہ اسٹیل ملز کے محنت کش حکومتی ظالمانہ پالیسیوں کو ہر گز تسلیم نہیں کریں گے، جبری برطرفیوں اور نجکاری پالیسی کے ذریعے ہزاروں محنت کشوں اور ان کے خاندانوں کا معاشی قتل عام کیا جا رہا ہے۔ اسٹیل ملز کا مزدور کبھی بھی ان ظالمانہ پالیسیوں کو تسلیم نہیں کرے گا۔

ریل مزدور اتحاد کی جانب سے علی مردان نے کہا کہ کراچی میں اسٹیل ملز کے محنت کشوں نے ریلوے کراچی ڈویژن کو بند کیا اگر حکومت نے فوری طور پر ان کو بحال نہ کیا تو ہم پورے ملک میں ریل کا پہیہ جام کر دیں گے۔

ینگ ڈاکٹرز کی جانب سے ڈاکٹر عمران اور ڈاکٹرعبدالرحمن نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ینگ ڈاکٹرز نجکاری کی ہر شکل کو مسترد کرتے ہیں، ایم ٹی آئی کی شکل میں ہسپتالوں کی نجکاری کی جارہی ہے۔ ہم اس جدوجہد میں اسٹیل ملز، واپڈا، پی آئی اے، ریلوے سمیت تمام محنت کشوں کے ساتھ کھڑے ہیں اور اسٹیل ملز کے محنت کشوں کے مطالبات تسلیم نہ ہوئے تو ینگ ڈاکٹرز پورے ملک میں سخت احتجاج کریں گے۔

پاکستان ورکرز کنفیڈریشن کی جانب سے اسامہ طارق نے کہا کہ واپڈا ہائیڈرو یونین سمیت تمام ادارے اسٹیل ملز کی بحالی کی جدوجہد میں شامل ہیں اور ہم اس فیصلے کو ہرگز تسلیم نہیں کریں گے، آئی ایم ایف کی پالیسیو ں کے خلاف ہر ادارے کی جدوجہد میں شانہ بشانہ کھڑے ہیں۔

پی ٹی یو ڈی سی  کی جانب سے عمرشاہد نے کہا کہ ہم آل ایمپلائز ایکشن کمیٹی آف اسٹیل ملز کے حصے کے طور پر اسٹیل ملز کی اس لڑائی میں ہراول دستے کے طور میں شامل ہیں۔ اسٹیل ملز کی نجکاری اور جبری برطرفیوں کے خلاف پہلے بھی ملک گیر احتجاجات منظم کئے گئے اور اب کی بار ہم آل پاکستان ایمپلائز پنشنرز اور لیبر تحریک میں شامل تمام یونینز کی ساتھ مل کر اسٹیل ملز کی اس تحریک کو ہر ادارے کو ساتھ جوڑتے ہوئے ملک بھر میں بڑے پیمانے پر تحریک منظم کریں گے۔ اس سلسلے میں لائحہ عمل تیار کرنے کے لئے 5 دسمبر کو پشاور میں ہنگامی اجلاس طلب کیا گیا ہے اور رہبر تحریک اسلم خان کی قیادت میں اب کی بار ہم پورے ملک کو جام کر دیں گے۔

آخر میں آل ایمپلائز ایکشن کمیٹی آف اسٹیل ملز لاہور کی کور کمیٹی کے ساتھ آئندہ کے لائحہ عمل کے لئے جلد مشارتی اجلاس بلوانے کا اعلان کیا گیا، جس میں دیگر یونینز کے ساتھ روابط اور متحد ہو کر تحریک کو آگے بڑھانے کے لئے لائحہ عمل تیار کیا جائے گا۔