ریلوے کے محنت کشوں کو 25فیصد ٹیکنیکل الاؤنس کا اجرا پوری مزدور تحریک کی کامیابی ہے !

رپورٹ: PTUDC لاہور

31000 سے زائد ریلوے کے محنت کشوں کو 25فیصد ٹیکنیکل الاؤنس کا اجرا صرف ریلوے ملازمین ہی نہیں بلکہ تحریک کی بھی کامیابی ہے، رہبر تحریک محمد اسلم خان آل پاکستان ایمپلائز، پنشنرز و لیبر تحریک

ریلوے مزدور اتحاد کے تمام قائدین اس جدوجہد میں کامیابی پر مبارکباد کے مستحق ہیں، نذر مینگل مرکزی چیئرمین پی ٹی یو ڈی سی

مورخہ 29 جولائی کو ریلوے کے محنت کشوں کی ان تھک جدوجہد کے نتیجے میں وفاقی وزیر برائے ریلوے شیخ رشید اور ریل مزدور اتحاد کے وفد محمد سرفراز خان، چوہدری عنایت علی گجر، میاں محمود ننگیانہ، میاں خالد محمود، راجہ رضوان ستی، رانا معصوم اورعلی مردان کے مابین مذاکرات کے بعد وفاقی وزیر کی جانب سے فوری طور پر ٹیکنیکل الاؤنس کو 25 فیصد کرنے کے احکامات جاری کئے گئے۔ کچھ دن بعد ہی سپریم کورٹ کی جانب سے تمام TLA ملازمین کو ریگولر کرنے کے احکامات بھی دیے گئے۔ اس عرصے کے دوران ریل مزدور اتحاد کی جانب سے اسلام آباد منسٹری اور ریلوے ہیڈ کواٹر لاہور میں ٹیکنیکل الاؤنس کے نوٹیفکیشن پرعملدرآمد کے لئے مسلسل کوششیں جاری رہیں اور آج مورخہ 3 ستمبر کو ہیڈ کواٹر میں ریلوے چیف پرسونل آفیسر سفیان سرفراز ڈوگرنے 25 فیصد ٹیکنیکل الاؤنس پر عمل درآمد کا نوٹیفکیشن سرفرازخان کو خود دیا اور ساتھ ہی اسے تمام ڈویژنز کو عمل درآمد کے لئے ارسال کر دیا گیا۔ اس موقع پر ریل مزدور اتحاد کی قیادت نے محنت کشوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اپنے مطالبات کے لئے جدوجہد جاری رہے گی اور اس جدوجہد میں شامل تمام یونینز بشمول PTUDC کا شکریہ ادا کیا گیا۔

ریلوے کے محنت کشوں کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے نذرمینگل مرکزی چیئرمین پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین PTUDC اور مرکزی جنرل سیکرٹری قمر الزمان خان نے کہا کہ ہم محنت کشوں کی زندگیوں میں آنے والی بہتری کو خوش آمدید کہتے ہیں تاہم یہ واضح ہے کہ عالمی مالیاتی اداروں کے دباؤ میں جس قدر حملے ہو رہے ہیں اس صورتحال میں متحد ہو کر جدوجہد ہی واحد راستہ ہے۔ لہٰذا اتحاد کو مضبوط بناتے ہوئے سرمایہ دارانہ نظام کے خاتمہ تک جدوجہد جاری رہے۔ آل پاکستان ایمپلائز، پنشنرزو لیبرتحریک کے مرکزی رہبر محمد اسلم خان نے ریلوے ملازمین کو 25 فیصد ٹیکنیکل الاؤنس کے اجراء پر عمل درآمد کے فیصلے کے بعد اپنے بیان میں ریلوے ملازمین اور ریلوے مزدور اتحاد کے تمام قائدین کو خصوصی مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ یہ کامیابی ریلوے مزدور اتحاد اور ریلوے ملازمین کی انتھک جدوجہد کا نتیجہ ہے۔ اس کامیابی میں آل پاکستان ایمپلائز، پنشنرز و لیبر تحریک کی وہ تمام ممبر تنظیمیں اور لیبر یونینز برابر کی شریک ہیں جنہوں نے ریلوے ملازمین کی جدوجہد میں بھرپور ساتھ دیا اور انھیں اپنے مطالبات کے حصول کی جدوجہد میں کامیابی سے روشناس کرانے میں بھرپور کردار ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ یہ صرف ریلوے ملازمین کی کامیابی نہیں بلکہ ملازمین اور لیبر ورکرز کے بے مثال اتحاد کی پہلی فتح ہے لیکن تحریک کی منزل ابھی دور ہے۔ اگر ملازمین اور محنت کشوں کا اتحاد یوں ہی جاری رہا تو وہ وقت دور نہیں جب ہم ملازمین اور لیبر ورکرز کے تمام مطالبات منظور کرانے اور ان کے حقوق کا تحفظ کرنے میں کامیاب ہوجائیں گے۔ ہماری یہ تحریک اس وقت تک جاری رہے گی جب تک اس تحریک میں شامل ہر ملازم اور ہر مزدور کے حقوق کا تحفظ یقینی نہیں بنایا جاتا۔

محمد اسلم خان نے ایک بار پھر ریلوے ملازمین کی تنظیموں سمیت تحریک میں شامل تمام سرکاری ملازمین کی تنظیموں اور لیبر یونینز کے قائدین کو 14ستمبر2020 کو پشاور میں منعقد ہونے والے احتجاجی مظاہرے میں بھرپور شرکت کی دعوت دی اور کہا کہ ہمارا یہ احتجاج حکومت کو اپنے مطالبات کی منظوری کیلئے صرف الٹی میٹم ہوگا، اگر حکومت نے سرکاری ملازمین، پنشنرز اور لیبر ورکرز کے جائز مطالبات کو نظر انداز کرنے کی کوشش کی تو وہ احتجاج کے اگلے مرحلے میں بیک وقت پورے ملک میں احتجاج اور تالہ بندی کی طرف قدم اٹھانے پر مجبور ہوں گے جس کی تمام تر ذمہ داری حکومت وقت پر عائد ہوگی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*