ملتان : یوٹیلٹی سٹور کارپوریشن کے محنت کشوں کا احتجاج

رپورٹ: PTUDC ملتان

مورخہ 13 اکتوبرآل پاکستان ورکرز یونین اور نیشنل ورکرز یونین  کی جانب سے یوٹیلٹی سٹور ز کارپوریشن کی مجوزہ نجکاری اور ریاستی مشیر کے احکام پر سٹوروں کے آپریشنز بند کرنے کے خلاف پریس کلب ملتان کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کا انعقاد کیا گیا۔ مظاہرین سے خالد منیر جوائنٹ سیکرٹری، تحسین بابر نائب صدر، اسرار فرید، ملک شہزاد، چوہدی یاسین ، جمشید خان، چوہدری منیر اور پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپیئن کے مرکزی رہنما ندیم پاشا نے خطاب کیا۔

یوٹیلٹی سٹور کارپوریشن ریاستی ادارہ ہے جس کا مقصد عوام کو منڈی کی نسبت کم داموں پر اشیائے ضرورت مہیا کر نا ہے۔ یہ ادارہ 2014ء تک منافع بخش تھا، 2008 ء تا 2014 ء تک ادارے کا سالانہ منافع 16 ارب رہا جبکہ  ہر سال 15 ارب سے زائد حکومت کو ٹیکس کی مد میں ادا کرتا رہا ہے۔  ن لیگ کی پچھلی حکومت نے پاکستان کے محنت کشوں کے خلاف اقدامات کرتے ہوئے یوٹیلٹی سٹور کو 30 ارب سے زائد سبسڈی ادا نہیں کی اور دانستہ طور پر ادارے کے منافع کو خسارے میں تبدیل کر دیا گیا۔ ان اقدامات کا مقصد نجکاری کے لئے راہ ہموار کرنا تھی ، اسی دوران 12 مینیجنگ ڈائریکٹر ز تبدیل کئے گئے۔ جیسا کہ پی ٹی آئی کی حکومت آئی ایم ایف سے قرضہ لینے کی کوششوں میں مگن ہے اس سلسلے میں ان کی شرائط پر عمل کرتے ہوئے اس نے ریاست کی جانب سے کٹوتیوں کے پروگرام اور سبسڈیوں کے خاتمے کا پروگرام متعارف کروا یا ہے۔ ان تمام اقدامات کا مقصد سٹیٹس کو کا تحفظ اورسرمایہ داروں کے لئے   بلند منافعوں  کو یقین بنانا ہے جبکہ یہ اقدامات محنت کش طبقے کی زندگیوں پر براہ راست حملہ ہے۔ان اقدامات سے بیروزگار ی میں اضافہ ہو گا اور سبسڈیوں کے خاتمے سے اشیاء ضروریا ت کی قیمتوں میں بڑے پیمانے پر اضافہ ہو گا۔

مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے مقررین کا کہنا تھا کہ حکومت کی مزدور دشمن پالیسیوں کو ہر گز تسلیم نہیں کیا جا ئے گا بلکہ اس کے خلاف جدوجہد ناگزیر ہے۔ اس موقع پرمطالبہ کیا گیا کہ یوٹیلٹی سٹور کے تمام ڈیلی ویجز اور کنٹریکٹ ملازمین کو فی الفور مستقل روزگار فراہم کیا جائے اور حکومت ادارے کی نجکاری سے باز رہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ اگر حکومت نے ہمارے مطالبات منظور نہ کئے تو ملک بھر کے 6000 سٹورز کو محنت کش بند کرکے نظام زندگی مفلوج کردیں گے۔ آخرمیں 22 اکتوبر کو اسلام آباد میں احتجاج کا اعلان کیا گیا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*