رحیم یارخاں:’’بحالی مزدوریکجہتی کانفرنس‘‘ کا انعقاد

رپورٹ: رئیس طارق

مزدورایکشن کمیٹی رحیم یارخاں اور پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین PTUDC رحیم یارخاں نے17فروری بروز ڈسٹرکٹ باررحیم یارخاں کے لائبریری ہال میں یونی لیور رحیم یار خاں کے برطرف مزدوروں کے لئے ’’بحالی مزدوریکجہتی کانفرنس‘‘منعقد کی۔ منتظمین نے مزدوروں ،ٹریڈیونیز،کسان تنظیم اورسماجی تنظیموں کو مدعو کرنے کے ساتھ اس کانفرنس کوایک طرح سے ’’آل پارٹیز کانفرنس ‘‘ بنانے کی کوشش کی تھی ،جس بنا پر ہال میں پاکستان پیپلزپارٹی، شہید بھٹوسمیت دیگر سیاسی پارٹیوں کے نمائندگان بھی موجود تھے۔ ان تمام نمائندگان کا یونی لیور کے برطرف مزدوروں کی بحالی کی تمام تحریکوں میں متحرک کردار رہا تھا۔ یونی لیور انتظامیہ کی طرف سے پچھلے سالوں میں مزدوروں کے خلاف استحصالی ہتھکنڈوں، جبری چھانٹیوں اور مستقل روزگار کی بجائے عارضی دیہاڑی داری میں تبدیلی کا عمل جاری وساری ہے۔ اس صورتحال سے نمٹنے کیلئے لیبر یونین یونی لیور،پاکستان فوڈ فیڈریشن نے جدوجہد کا راستہ اختیار کیا۔ اس ضمن میں ہرسطح پر PTUDC کی طرف سے یونی لیور کے مزدوروں ، ٹریڈ یونین اور پاکستان فوڈ فیڈریشن کے ساتھ عملی یکجہتی کا مظاہرہ کیا گیا۔ ماضی میں مزدوروں کی بحالی کی کاوشیں مختلف مراحل طے کرتی ہوئی ایک مضبوط تحریک میں تبدیل ہوگئی ‘جس کو شہر اور علاقے کی موثر ٹریڈ یونیز، فیڈریشنز،سماجی اور سیاسی تحریکوں کی حمائت حاصل رہی۔ اس جدوجہد کے نتیجے میں سینکڑوں نکالے گئے مزدور بحال ہوگئے مگر تمام مزدور تاحال بحال نا ہوسکے۔

مورخہ 17فروری کی’’بحالی مزدوریکجہتی کانفرنس‘‘ کا بنیادی مقصد تحریک کو دوبارہ سے شروع کرنا تھا تاکہ باقی ماندہ مزدوروں کو بحال کرایا جاسکے۔ کانفرنس کی صدارت پاکستان فوڈ فیڈریشن کے سیکریٹری جنرل سید زمان خاں نے کی جبکہ مہمان خصوصی پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین کے مرکزی سیکریٹری جنرل قمرالزماں خاں اور عوامی پارلیمنٹ رحیم یارخاں کے صدر مولانا عبدالروف ربانی تھے۔ کانفرنس کے اسٹیج سیکریٹری کے فرائض مزدوربحالی تحریک یونی لیور کے روح رواں ندیم ملک نے سرانجام دیئے۔ PTUDC کے ریجنل آرگنائیزر محمود حیدر چغتائی نے یونی لیور کے برطرف مزدوروں کی تحریک کی تاریخ بیان کی۔ تحریک کے عروج وزوال، کامیابیوں اور ناکامیوں کا جائیزہ لیا گیا اور تحریک کو ازسر نو بحال کرنے کے لائحہ عمل کو کانفرنس کے شرکاء کے سامنے بیان کیا گیا۔ ڈسٹرکٹ مزدورایکشن کمیٹی کے نعیم مہاندرہ نے یونی لیورانتظامیہ کی ہٹ دھرمی کے خلاف جدوجہدکرنے کی ضرورت بیان کی۔ پاکستان تحریک انصاف کے حسن نواز خاں نیازی نے کہا کہ اپوزیشن میں جدوجہد کرنا آسان ہوتا ہے مگر میں عہد کرتا ہوں کہ یونی لیورکے مزدوروں اور دیگرمزدوروں کے حقوق کیلئے اپنی پارٹی اور دیگر سطحوں پر آواز بلند کروں گا اوران کے ساتھ شانہ بشانہ جدوجہد کرونگا۔ انہوں نے کہا کہ ماضی میں یونی لیور کے مزدوروں کو بحال کرانے کیلئے میں نے دیگر ساتھیوں کے ساتھ ہر سطح کی جدوجہد میں حصہ لیااور ضلعی انتظامیہ کوبھی انگیج کئے رکھا۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں مالکان اور انتظامیہ کے ہتھکنڈوں کے ساتھ اپنی کمزوریوں کا بھی جائیزہ لینا ہوگا بطور خاص مزدوراتحاد میں دراڑیں اور منافرت مزدورجدوجہدکے خاتمے کا باعث بنتے ہیں اس سے بچنے کی ضرورت ہے۔

پی وائی او کے فہیم خاں نے کہا یونی لیور کے مزدوروں کی بحالی کیلئے جو بھی قدم اٹھایا جائے گااس میں شامل رہیں گے۔ مزدورراہنما قاضی جاوید نے یونی لیور کے مزدوروں کی جدوجہد کو سراہا اوراسکا ساتھ دینے کا اعلان کیا۔ کسان اتحاد کے راہنما ایم ڈی گانگا نے کسان تحریک کے خدوخال پر روشنی ڈالی اور کسانوں کے استحصال اور مل مالکان کے ظلم واستحصال کی وضاحت کی۔ انہوں نے یونی لیور کے مزدوروں کا ساتھ دینے کا اعلان کیا۔ پاکستان پیپلز پارٹی کے حسنین شاہ نے یونی لیور انتظامیہ پر واضع کیا کہ وہ مزدوروں کے خلاف انتقامی کاروائیوں سے باز آجائے۔ مسلم لیگ سٹوڈنٹ فیڈریشن کے راہنمانے کہا کہ وہ ماضی میں بھی یونی لیور کے مزدوروں کی بحالی کی تحریک میں ساتھ رہے ہیں اور اب بھی ساتھ رہیں گے۔ جاگ ویلفئیر موومنٹ کے پیر جی اشرف نے بھی اپنے خطاب میں بحالی مزدورتحریک کا ساتھ دینے کا اعلان کیا۔ بزم فرید کے حسن معاویہ نے سماج کی طبقاتی تفریق کی وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ اگر محنت کش طبقہ یکجا ہوجائے تو اسکے دشمنوں کو استحصال کی جراء ت نہیں ہوسکتی ۔ پیپلز پارٹی شہید بھٹو کے جام اعظم انیس نے یکجہتی کا اعلان کیا۔ پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین کے سیکریٹری جنرل قمرالزماں خاں نے اپنے اظہار خیال میں عدالتی نظام بطور خاص لیبر کورٹس کے کردار پر روشنی ڈالتے ہوئے زور دیا کہ گیٹ کی جدوجہد کے احیاء کی طرف بڑھاجائے،انہوں نے یونی لیور کے مزدوروں کی بحالی کیلئے جدوجہد کو وسیع بنیادوں پر استوار کرنے پر زوردیا اور دیگر صنعتوں اور شہروں کے محنت کشوں کو اس تحریک کی حمائت کیلئے تیار کرنے کی ضرورت اجاگر کی ۔ انہوں نے کہا کہ یونی لیور میں دوسری یونیز کے مزدورجو بحالی مزدورتحریک سے الگ تھلگ یا مخالف ہیں انکے پاس ڈور ٹو ڈور جاکر انہیں شامل کرنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ PTUDC کا دل یونی لیور کے مزدوروں کے دل کے ساتھ دھڑکتا ہے،ماضی کی تمام تر جدوجہد میں بھی پی ٹی یوڈی سی کے ساتھی ہراول تھے اب بھی رہیں گے اور ہم دیگر شہروں میں اس تحریک کی حمائت کیلئے پیغام محنت کشوں تک پہنچائیں گے۔ جمعیت علماء اسلام کے راہنما اور عوامی پارلیمنٹ رحیم یارخاں کے صدر مولانا عبدالروف ربانی نے کہا کہ وہ یونی لیور کا معاملہ ضلعی انتظامیہ تک لے کرجائیں گے اور اپنے ڈیلی گیشن میں مزدوروں کے نمائندوں کو بھی شامل کریں گے۔

دیگر مقررین نے خطاب کرتے ہوئے کہا مطالبہ کیا کہ یونی لیور سے برطرف مزدوروں کو فوری طور پر بحال کیا جائے۔ ناجائیز برطرفیاں واپس نا لی گئیں تومزدور،سیاسی،سماجی ،کسان تنظیمیں سڑکوں پر نکلنے پر مجبورہونگی۔ مستقل کام پر ٹھیکے داروں کو نوازنے اور مزدوروں کو حقوق سے محروم رکھنے کیلئے دیہاڑی دارمزدوری کا نظام قائم کرنا استحصال کا بدترین استعمال ہے،پالیسی واپس لیکر مستقل بھرتیاں کی جائیں۔ یونی لیور رحیم یارخاں میں کام کرنے کا پہلا حق مقامی مزدورکو ہے،دوسرے شہروں سے بھرتی کرنے کا مقصد مقامی مزدورکی حق تلفی اور دوسرے شہر کے مزدورکو بے یارومددگار کرکے ظلم وجبر کا نفاذ ہے۔ یونی لیور میں کام کے مطابق مقامی مزدوروں کو بھرتی کیا جائے۔ یونی لیور کے مزدوروں کی بحالی اور انکے خلاف انتظامی ہتھکنڈوں کی روک تھام کیلئے تمام مزدور،سماجی تنظیمیں ، سیاسی پارٹیاں،کسان تحریکیں یکجا ہوکر تحریک چلائیں گی۔ مقررین نے یونی لیور کی چار دیواری کے اندر مزدوروں پر مختلف قسم کی بندشوں پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ انتظامیہ کو خبردار کیا کہ وہ فوری طور پراپنے رویے کو مزدوردوست بنائے ورنہ مزدوروں کی بے چینی اور ردعمل کے نتائج کی ذمہ داری ان پر ہوگی ۔ مزدوربحالی کانفرنس نے مارچ میں رحیم یارخاں میں برطرفیوں اور مزدوروں پر جبر کے خلاف ’’لیبر کانفرنس‘‘ کے انعقاد کا اعلان کیا،جس میں ملک بھر سے مزدوررہنما شریک ہونگے۔ PTUDC کی طرف سے یونی لیور رحیم یارخاں کے برطرف مزدوروں کو واپس نا لینے کی صورت میں ملک بھر میں احتجاج کا اعلان کیا گیا ۔ آخر میں تقریب کے صدر اور پاکستان فوڈ فیڈریشن کے جنرل سیکریٹری سید زمان خاں نے یونی لیور تحریک کے مختلف ادوار پر بھرپورروشنی ڈالتے ہوئے ماضی میں کی گئی جدوجہد اور اسکے نتیجے میں بحال ہونے والے مزدوروں کی تفصیل بیان کی۔ تقریب کے میزبان اور اسٹیج سیکریٹری ندیم ملک نے شرکاء کا شکریہ ادا کرتے ہوئے تقریب کے خاتمے کا اعلان کیا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*